.

یمنی جزیرے سقطری میں مکونو طوفان کے بعد سعودی فورسز کی امدادی سرگرمیاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں مکونو طوفان سے متاثرہ جزیرے سقطری میں سعودی عرب کی فورسز نے امدادی سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں ۔سقطری میں جمعہ کو سمندری طوفان کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک اور کم سے کم چالیس لاپتا ہوگئے تھے۔

امریکا میں متعیّن سعودی سفیر شہزادہ خالد بن سلمان نے سعودی جائنٹ فورسز کی سقطری میں امدادی سرگرمیوں کو سراہا ہے۔انھوں نے ایک ٹویٹ میں لکھا کہ ’’ہمیں سقطری میں مکونو طوفان سے متاثرہ افراد تک خوراک ، ادویہ اور دوسرا امدادی سامان پہنچانے پر سعودی فورسز کی سرگرمیوں پر فخر ہے۔ ہم تمام ضرورت مند افراد تک امداد پہنچنے کے عمل کی نگرانی جاری رکھیں گے‘‘۔

یمنی ذرائع کے مطابق سقطری میں سمندری طوفان سے مرنے والوں میں چار یمنی اور ایک بھارتی شہری ہے اور لاپتا افراد میں بھی یمنیوں کے علاوہ بھارتی اور سوڈانی شہری شامل ہیں۔اس جزیرے میں مقامی ملاحوں کی ایک کشتی ڈوب گئی تھی اور اس پر سوار تین افراد لاپتا ہوگئے تھے۔

یمنی حکومت نے گذشتہ جمعرات کو سقطری میں سمندری طوفان ٹکرانے کے بعد ہنگامی حالت نافذ کردی تھی۔واضح رہے کہ سقطری کا جزیرہ جنوبی یمن اور ہارن آف افریقا کے درمیان واقع ہے اور یہ اپنی منفرد جنگیز حیات کی وجہ سے مخصوص پہچان کا حامل ہے۔