.

زکوٰۃ اور خمس یمنی عوام کی لوٹ کھسوٹ کا نیا حوثی حربہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں ایران نواز باغیوں نے مالی بحران سے نمٹنے کے لیے شہریوں زکوٰۃ اور خمس کی آڑ میں شہریوں کی جیبیں خالی کرنے کا نیا حربہ اختیار کیا ہے۔ دوسری جانب یمن کی آئینی حکومت نے زکوٰۃ اور خمس کے حوثی ہتھکنڈے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے غیرقانونی اور مجرمانہ طریقہ قرار دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمن کی آئینی حکومت کی طرف سے جمعہ کے روز جاری کردہ ایک بیان میں حوثیوں کے زیراہتمام جنرل زکوٰۃ کمیٹی کے قیام کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے شہریوں کی لوٹ کھسوٹ کا نیا حربہ قرار دیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ حوثی زکوٰۃ خمس نافذ کرکے یمن میں طبقاتی اور فرقہ وارانہ نظام کے قیام کی کوشش کررہے ہیں۔

یمن کی خاتون وزیر برئاے سماجی بہبود ابتھاج الکمال کی طرف سے حوثیوں پر الزام عاید کیا گیا ہے کہ وہ سماجی بہبود فنڈ کو منسوخ کرنے کے بعد اپنے زیرتسلط علاقوں میں اس کی متبادل جنرل زکوٰۃ باڈی کے قیام کے ذریعے شہریوں کی لوٹ مار کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ منگل کو حوثیوں کی طرف سے جنرل زکوٰۃ کمیٹی کے قیام کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس کمیٹی میں حوثیوں کے اہم لیڈروں کو مختلف عہدوں پر تعینات کیا گیا۔ اس کمیٹی کے ذریعے باغی اپنے زیرتسلط علاقوں سے 12 ارب ریال بٹورنے کی کوشش کر رہے ہیں تاکہ خانہ جنگی کے دوران باغی ملیشیا کو درپیش مالی قلت پر قابو پانے میں مدد مل سکے۔