.

سعودی عرب میں تاریخی لمحہ ،خاتون کو پہلے ڈرائیونگ لائسنس کا اجراء

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں کسی خاتون کو پہلے ڈرائیونگ لائسنس کے اجراء کا تاریخی لمحہ آ ہی گیا ہے اور سعودی حکام نے ایک خاتون کو کار چلانے کا اجازت نامہ جاری کردیا ہے۔

سوموار کو لائسنس کے اجراء کی ایک ویڈیو انٹرنیٹ پر جاری ہوتے ہی وائرل ہوگئی ہے۔اس کے ساتھ ٹویٹ میں کہا گیا ہے کہ ’’ سعودی عرب میں پہلے لائسنس کے اجراء پر مادر ِ وطن کی بیٹیاں ہزاروں مبارک بادیں قبول فرمائیں‘‘۔

سعودی خواتین کو ڈرائیونگ لائسنس کے اجراء کے لیے گذشتہ ما ہ تاریخ کا ا علان کیا گیا تھا۔ وہ شاہی فرمان کے مطابق 24 جون سے از خود کاریں چلا سکیں گی۔

محکمہ ٹریفک کے ڈائریکٹر جنرل محمد آل بسامی نے 8 مئی کو ایک بیان میں کہا تھا کہ ’’ خواتین کے کاریں چلانے کے لیے درکار تمام تقاضوں کو پورا کردیا گیا ہے اور 18 سال یا اس سے زائد عمر کی خواتین ڈرائیونگ لائسنس کے حصول کے لیے متعلقہ دفاتر میں درخواستیں دے سکتی ہیں‘‘۔

سعودی عرب میں قریباً آٹھ ہزار خواتین بیرون ممالک سے ڈرائیونگ لائسنس حاصل کر چکی ہیں۔ان کے لائسنس کچھ عرصے کے لیے سعودی عرب میں بھی کارآمد ہوں گے اور ان کی ڈرائیونگ میں مہارت کی جانچ کے بعد انھیں مقامی ڈرائیونگ لائسنس جاری کردیے جائیں گے۔

سعودی خواتین کو کار چلانے کی تربیت دینے کے لیے مملکت کے پانچ شہروں میں ڈرائیونگ اسکول قائم کیے گئے ہیں ۔ان اسکولوں میں بیرون ممالک سے ڈرائیونگ لائسنس حاصل کرنے والی سعودی خواتین اپنی ہم وطنوں کو کاریں چلانے کی تربیت دیں گی۔

حال ہی میں امریکا ، کینیڈا اور ویلز سے تعلق رکھنے والی خواتین کو سعودی عرب میں خواتین ڈرائیونگ انسٹرکٹروں کو تربیت دینے کے لیے منتخب کر لیا گیا ہے۔یہ خواتین دو سال تک سینیر معائنہ کار کے طور پر کام کریں گی ۔وہ نئی سعودی خواتین ٹرینروں کو تربیت دیں گی ۔