ایران یورینیم کی افزودگی کی صلاحیت میں اضافے کا آغاز کرے گا : ایٹمی توانائی ایجنسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی ایٹمی توانائی کی ایجنسی کا کہنا ہے کہ ایران منگل کے روز اقوام متحدہ کے زیر انتظام ایٹمی توانائی کی عالمی ایجنسی IAEA کو آگاہ کر دے گا کہ تہران یورینیم کی افزودگی کی صلاحیت بڑھانے کا عمل شروع کر رہا ہے۔

ایرانی ایجنسی کے ترجمان بہروز کمالوندی کے مطابق آئی اے ای اے کو ایک خط حوالے کیا جائے گا جس میں ایران اس بات کا اعلان کرے گا کہ منگل کے روز سے ہیگزا فلورائڈ کی زیادہ مقدار میں تیاری شروع کر دی جائے گی۔

کمالوندی نے مزید کہا کہ ایران سینٹری فیوجز کی تیاری کو تیز کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے جو یورینیم کی افزودگی میں کام آتے ہیں۔ ہیگزا فلورائڈ سینٹری فیوجز میں استعمال ہونے والا خام مواد ہے۔

ایران کے رہبر اعلی علی خامنہ ہی نے پیر کے روز بتایا تھا کہ انہوں نے ایرانی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ گزشتہ ماہ جوہری معاہدے سے امریکا کی علاحدگی کے بعد اگر 2015ء میں بڑی طاقتوں کے ساتھ طے پایا جانے والا یہ معاہدہ ختم ہوا تو یورینیم کی افزودگی بڑھانے کے لیے مطلوبہ تیاریاں کر لی جائیں۔

امریکا، فرانس، جرمنی، برطانیہ، روس اور چین کے ساتھ طے پائے جانے والے جوہری معاہدے کے تحت ایران اپنی یورینیم افزودہ کرنے کی صلاحیت محدود کرنے کا پابند ہے تا کہ مذکورہ طاقتیں قائل ہو سکیں کہ ایران ایٹم بم بنانے میں کامیاب نہیں ہو سکے گا۔

جوہری معاہدہ ایران کو 3.67 فی صد تک یورینیم کی افزودگی کی اجازت دیتا ہے جو ایٹمی ہتھیار بنانے کے لیے مطلوب 90 فی صد کی دہلیز سے بہت کم ہے۔

جوہری معاہدے سے قبل تہران 20 فی صد تک خالص یورینیم افزودہ کر رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں