.

وائٹ ہاوس کے افطار ڈنر میں ٹرمپ نے سعودی عرب سے متعلق کیا کہا؟

مسلم گروپوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پہلی افطار پارٹی میں شرکت سے انکار کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے وہائٹ ہائوس میں پہلی مرتبہ مسلمانوں کے لئے افطار ڈنر کا اہتمام کیا گیا۔ ۔ وائٹ ہائوس کی ترجمان کے مطابق افطار ڈنر میں تیس سے چالیس مسلم رہنمائوں نے شرکت کی۔

تقریب میں متعدد اسلامی ملکوں کے سفیروں نے شرکت کی۔ اپنے خطاب میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ مشرق وسطی [یعنی سعودی عرب] کے پہلے دورے میں گذارے دو ایام ان کی زندگی کے یادگار دن تھے۔

شرکاء تقریب سے مخاطب ہوتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اگرچہ میں نے آپ کے ساتھ تقریباً ایک برس کا کم عرصہ گذارا ہے، تاہم وہ وقت اور دو دن میری زندگی کے بہترین لمحات تھے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ سال وائٹ ہائوس کی برسوں پرانی روایت کے برخلاف مسلمانوں کیلئے افطار ڈنر کا اہتمام نہیں کیا تھا لیکن اس سال انہوں نے افطار پارٹی منعقد کیامریکا کی بڑی مسلم تنظیموں کو شرکت کی دعوت نہیں دی گئی۔

دوسری جانب مسلم رہنمائوں اور گروپوں نے ٹرمپ کے مسلمانوں کے خلاف بیانات پر ان کے افطار ڈنر میں شرکت سے انکار کردیا ۔