.

’یوم القدس‘ ریلی میں ایرانی عہدیدار کےخلاف ’خائن‘ اور ’وطن فروش’ کے نعرے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں جُمعہ کے روز فلسطینیوں کی حمایت میں نکالی جانے والی ’یوم القدس‘ ریلی کےدوران مظاہرین نے اسرائیل اور امریکا کے خلاف نعرے بازی کے بجائے ایرانی حکومت کے عہدیداروں کے خلاف نعرے بازی شروع کردی۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق ایرانی سماجی کارکنوں نے سوشل میڈیا پر ایک فوٹیج پوسٹ کی ہے جس میں دکھایا گیا ہے کہ تہران میں ایک ریلی کے دوران ایرانی جوہری توانائی کے ادارے کے سربراہ علی اکبر صالحی کے خلاف نعرے لگ گئے جب وہ ریلی سے خطاب کے لیے پہنچے۔

فوٹیج کے مطابق مظاہرین نے ایرانی جوہری توانائی کے ادارے کےسربراہ علی اکبر صالحی کے خلاف ’منافق‘ خائن، وطن فروش کے نعرے لگائے جب کہ کئی مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر ’منافق مردہ باد‘ وطن فروش مردہ باد اور دیگر حکومت مخالف نعرے درج تھے۔

خیال رہے کہ سنہ 2015ء میں ایران اور عالمی طاقتوں کے درمیان طے پائے سمجھوتے کے بعد ایرانی صدر حسن روحانی نے علی اکبرصالحی کو اس معاہدے کو حتمی شکل دینے میں خدمات پر تمغہ شجاعت سے نوازا تھا۔

فوٹیج میں علی اکبر صالحی کو سخت مایوس اور غصے میں دیکھا جاسکتا ہے۔ انہیں چاروں اطراف سے سیکیورٹی فورسز نے گھیرے میں لے رکھا ہے۔ اس موقع پر انہوں نے اپنے خلاف نعرے لگانے والوں کو غیرمہذب، کذاب اور ’بے ادب‘ کہہ کرتنقید کا نشانہ بنایا۔

اگست 2017ء کو علی اکبرصالحی نے ایک انٹرویو میں اعتراف کیا تھا کہ ملک کے بعض حلقے عالمی طاقتوں کے ساتھ طے پائے سمجھوتے کو ملک کے ساتھ خیانت سے تعبیر کرتے ہیں۔ جب کہ وہ اس معاہدے کو عنایات خدا وندی میں سے ایک نعمت سمجھتے ہیں۔