.

ٹرمپ کِم ملاقات : شمالی اور جنوبی کوریا کی جنگ کے خاتمے کا منظر نامہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شمالی کوریا کے سربراہ کِم جونگ اُن کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے تاریخی ملاقات سے ایک روز قبل تمام تر نظریں اس امکان پر مرکوز ہیں کہ دونوں سربراہان کے بیچ کوریا کی جنگ کے خاتمے پر اتفاق رائے ہو جائے گا۔

اگر دونوں رہ نماؤں کے درمیان اتفاق رائے ہو گیا تو پھر جنگ کے خاتمے کا اعلان اور جزیرہ نما کوریا میں مستقل امن کے واسطے ایک امن معاہدے کا طے پانا جلد عمل میں آئے گا۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے 7 جون کو منعقد ہونے والی ایک پریس کانفرنس میں عندیہ دیا تھا کہ کِم جونگ اُن کے ساتھ ملاقات میں کوریا کی جنگ کے خاتمے کے حوالے سے اتفاق رائے کا امکان ہے۔ تاہم ایسا نظر آ رہا ہے کہ ٹرمپ اور کم جونگ کی ملاقات کے بعد شمالی کوریا ، جنوبی کوریا اور امریکا کے سہ فریقی سربراہ اجلاس کے انعقاد کا زیادہ امکان نہیں۔ اس لیے کہ شمالی کوریا اور امریکا کی جانب سے جنوبی کوریا کے صدر مون جے اِن کو سنگاپور آنے کی دعوت نہیں دی گئی۔

جنوبی کوریا کی نیوز ایجنسی "یون ہیپ" کی جانب سے پیر کے روز جاری تجزیے کے مطابق ماہرین نے توقع ظاہر کی ہے کہ پہلے شمالی کوریا اور امریکا کے درمیان سربراہ اجلاس کے دوران کوریا کی جنگ کے خاتمے پر اتفاق رائے ہو گا اور بعد ازاں دونوں کوریاؤں اور امریکا کے بیچ بات چیت کے ذریعے اس جنگ کے خاتمے کا اعلان سامنے آئے گا۔

ڈونلڈ ٹرمپ یہ اعلان کر چکے ہیں کہ شمالی کوریا کے سربراہ کے ساتھ سنگاپور ملاقات اچھی ہونے کی صورت میں وہ کِم جونگ اُن کو وہائٹ ہاؤس آنے کی دعوت دینے کے لیے تیار ہیں۔ اس امکان کے پیشِ نظر شمالی کوریا اور امریکا کے بیچ دوسری سربراہ ملاقات کے بعد ممکنہ طور پر مذکورہ جنگ کے خاتمے کا اعلان کیا جائے گا۔

دونوں کوریاؤں اور امریکا کے ذریعے جنگ کے خاتمے کا اعلان سامنے آیا تو توقع ہے کہ یہ اعلان جنگ بندی کے معاہدے کے دن 27 جولائی کو یا پھر ستمبر میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 73 ویں اجلاس کے موقع پر کیا جائے گا۔

بعض دیگر حلقوں کے نزدیک جنگ کے خاتمے کا اعلان شاید شمالی کوریا، جنوبی کوریا اور امریکا کے وزراء خارجہ کے اجلاس کے دوران سامنے آئے گا۔