.

ڈونلڈ ٹرمپ کی کِم جونگ اُن سے ملاقات کے ’’بہت اچھے‘‘ نتیجے کی پیشین گوئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ شمالی کوریا کے ساتھ ’’ بہت اچھے طریقے‘‘ سے معاملات طے پاسکتے ہیں۔انھوں نے سوموار کو یہ بات شمالی کوریا کے لیڈر کِم جونگ اُن سے ملاقات سے ایک روز قبل کہی ہے۔

انھوں نے سنگاپور کے وزیراعظم لی شیان لونگ کی جانب سے اپنے اعزاز میں دیے گئے ظہرانے کے موقع پر کِم جونگ اُن سے منگل کو ہونے والی بات چیت کے بارے میں خوش اُمیدی کا اظہار کیا ہے۔

صدر ٹرمپ نے کہا:’’ ہم کل ایک بہت دلچسپ ملاقات کرنے جارہے ہیں اور میرے خیال میں معاملات بہت اچھے طریقے سے طے پاسکتے ہیں‘‘۔ انھوں نے میزبان وزیراعظم لی شیان سے مخاطب ہوکر کہا کہ سنگاپور میں ملاقات کا فیصلہ بہت سوچ سمجھ کر کیا گیا ہے۔

انھوں نے لی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ’’ ہم آپ کی میزبانی ، پیشہ واریت اور دوستی کو سراہتے ہیں‘‘۔

شمالی کوریا کے لیڈر کِم جونگ اُن بھی گذشتہ کل سے سنگاپور میں ہیں۔دونوں لیڈروں کے درمیان سنگاپور کی بندرگاہ کے ایک ریزارٹ آئلینڈ سینٹوسا میں واقع ہوٹل کاپیلا میں مقامی وقت کے مطابق کل صبح نو بجے ملاقات شروع ہوگی۔اس طرح وہ دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کے حوالے سےایک نئی تاریخ رقم کریں گے۔

اس ملاقات کے حوالے سے بہت سی توقعات وابستہ کی جارہی ہیں اور اگر دونوں لیڈروں کے درمیان جزیرہ نما کوریا کو جوہری ہتھیاروں سے پاک بنانے کے لیے کوئی سمجھوتا طے پاجاتا ہے تو اس سے امریکا کی اپنے ایک سخت حریف ملک شمالی کوریا سے دشمنی کے خاتمے اور دوستی کی راہ ہوجائے گی۔