عرب اتحاد نے حوثی ملیشیا کی امدادی تنظیموں کو دھمکیوں کی مذمت کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یمن میں عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے حوثی ملیشیا کی عالمی امدادی تنظیموں کے خلاف دھمکیوں کی مذمت کردی ہے اور امدادی کارکنوں کے تحفظ کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

انھوں نے ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ عرب اتحاد نے امدادی کارکنان کے تحفظ کے پیش نظر امدادی سرگرمیوں کے دوران میں کوئی حملہ نہ کرنے سے متعلق سیکڑوں مرتبہ ہدایات جاری کی ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ یمنی فوج صعدہ کی جانب جانے والے حوثیوں کی کمک کے تمام راستوں کو منقطع کرنے کی تیاری کررہی ہے۔

کرنل ترکی المالکی نے نیوز کانفرنس میں ایک ویڈیو بھی دکھائی ۔اس میں صعدہ میں حوثیوں کے میزائل لانچر ، حجہ میں ڈرون تیار کرنے والی ایک فیکٹری کی تباہی اور الجوف میں حوثیوں پر حملے کے مناظر دکھائے گئے تھے۔

انحوں نے یہ بھی کہا کہ الحدیدہ کی بندرگاہ حوثیوں کے لیے ہتھیاروں کی اسمگلنگ کا مرکز بن چکی ہے۔انھوں نے بتایا کہ مغربی ساحل کے مکینوں نے حوثیوں کے نعروں کو مٹانے کے لیے ایک مہم شروع کردی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ حوثیوں نے گذشتہ دوماہ کے دوران میں سعودی عرب کی جانب چار بیلسٹک میزائل فائر کیے ہیں، ان میں ایک یمن کی حدود ہی میں گر گیا تھا۔

ترکی المالکی کے بہ قول الحدیدہ میں حوثیوں کو مختلف سرکاری اداروں سے لوٹی گئی دو کروڑ بیس لاکھ ڈالرز کی رقم اور پانچ ہزار سے زیادہ پاسپورٹس اسمگل کرنے کی کوشش کی گئی تھی تاکہ وہ ملک سے فرار ہوسکیں مگر حوثی کمانڈروں اور ان کے خاندانوں کے لیے بھیجی گئی یہ رقم اور پاسپورٹس ضبط کر لیے گئے ہیں۔

اتحادی ترجمان نے یمن میں سوموار کوفرانس میں قائم ڈاکٹروں کی بین الاقوامی تنظیم طبیبان ماورائے سرحد کے زیر انتظام کسی طبی مرکز کو حملے میں نشانہ بنائے جانے کی بھی تردید کی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ عرب اتحاد اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریفتھ کےساتھ مل کر یمن میں جاری تنازع کے کسی پُرامن حل کے لیے بھی کام کررہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں