حوثیوں نے الحدیدہ کو حوالے کرنے کی تمام سیاسی کوششیں ناکام بنا دیں : عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے کہا ہے کہ حوثی شیعہ باغیوں نے یمن کے مغربی شہر الحدیدہ کو پُرامن طریقے سے سرکاری فوج کے حوالے کرنے کے لیے تمام سیاسی کوششیں ناکام بنا دی ہیں ۔

انھوں نے العربیہ کے سسٹر چینل الحدث سے بدھ کو گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حوثی ملیشیا نے الحدیدہ سے انخلا کے لیے دی گئی ڈیڈ لائن کو بھی درخور اعتنا نہیں سمجھا ہے اور اس کو یکسر نظرانداز کیا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ یمنی فوج عرب اتحاد کی مدد سے تمام محاذوں پر پیش قدمی کررہی ہے اور بالخصوص وہ الحدیدہ کے ہوائی اڈے کی جانب بڑھ رہی ہے۔حوثیوں نے یمنی فوج کی پیش قدمی کو روکنے کے لیے شہر کے نواح میں اور ارد گرد بڑی تعداد میں بارودی سرنگیں بچھا دی ہیں۔

کرنل ترکی المالکی نے الحدث کو بتایا کہ ’’ ہم حوثی ملیشیا کی بارودی سرنگوں کی تنصیب کے بعد بڑی احتیاط سے الحدیدہ کی جانب بڑھ رہے ہیں تاکہ شہریوں کی زندگیوں کو بچایا جاسکے‘‘۔

ان کا کہنا ہے کہ حوثی شہریوں کو الحدیدہ سے باہر نکلنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔اس کے پیش نظر ہم نے تمام پہلووں کو ملحوظ رکھ کر ایک مربوط پلان ترتیب دیا ہے۔ ان کے بہ قول تمام محاذوں پر حوثیوں کو بڑی تعداد میں قیدی بنا لیا گیا ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ الحدیدہ میں ہم نے انسانی اور امدادی سرگرمیوں کے لیے ایک منصوبہ ترتیب دیا ہے۔انھوں نے واضح کیا کہ الحدیدہ شہر مغربی ساحلی علاقے میں واقع یمن کے باقی صوبو ں کی حوثی باغیوں کے قبضے سے آزادی کے لیے ایک نقطہ آغاز ہوگا۔

یمنی فوج اور عوامی مزاحمتی فورسز نے بدھ کی صبح عرب اتحاد کی مدد سے الحدیدہ شہر اور اس کی بندرگاہ کو حوثیوں کے قبضے سے واگزار کرانے کے لیے سرکاری طور پر ’’سنہری فتح ‘‘ کے نام سے فیصلہ کن معرکے کا آغاز کیا ہے۔یمن کے ایک فوجی ذریعے کا کہنا ہے کہ عرب اتحاد کی فضائی اور بحری مدد سے ایک سے زیادہ اطراف سے الحدیدہ کی جانب پیش قدمی کی جارہی ہے ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں