عید پرطالبان جنگجو کا افغان فوجی کے ساتھ’رقص‘!

دیرینہ دشمن عید پر بھائی بھائی بن گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

طالبان اور افغانستان کی سرکاری فوج ایک دوسرے کے کٹر دشمن سمجھے جاتے ہیں مگرافغانستان میں عید کے موقع پر حکومتی ارکان اور طالبان کی جانب سے جنگ بندی کے اعلان کے بعد گذشتہ اٹھارہ برسوں میں پہلی مرتبہ طالبان جنگجوؤں، افغان آرمی اور عوام نے مل کر ایک ساتھ عید منائی۔

سوشل میڈیا پر افغانستان کے مختلف شہروں اور قصبوں سے ہزاروں تصاویر اور ویڈیوز شیئر کی گئی ہیں، جن میں طالبان جنجگوؤں کے ساتھ نہ صرف عوام نے بلکہ افغان آرمی کے جوانوں نے بھی تصویریں کھنچوائیں۔

یہاں تک کہ ایک ویڈیو میں تو آرمی اور طالبان جنگجو پشتو گانے پر 'اتنڑ' یعنی روایتی رقص کرتے ہوئے نظر آئے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی اس فوٹیج میں افغانستان کی ملٹری پولیس کے اہلکاروں اور ایک طالبان جنگ جودیکھا جاسکتا ہے۔ فوجی اہلکار مزاح مزاح میں طالبان جنگ جو پربندوق تانتا ہے۔ بعد میں دونوں پشتو گانے پر رقص کرتے ہیں۔ فوجی اہلکار رقص کرتا ہے اور طالبان اسے دیکھ کر پہلے تالیاں بجاتا ہے، پھروہ بھی رقص میں شامل ہوجاتا ہے۔ 2001ء کو امریکی فوج کے ہاتھوں طالبان حکومت کے خاتمے کے بعد یہ پہلا موقع ہے جب افغان فوج اور طالبان کو ایک دوسرے کے قریب دیکھا گیا۔

جمعہ کے روزافغانستان کے صدر اشرف غنی نے طالبان سےجنگ بندی میں توسیع کا مطالبہ کیا تھا تاہم طالبان نے توسیع کی تجویز مسترد کردی تھی۔

دارالحکومت کابل میں عید کے دوسرے روز افغانستان کے وزیر داخلہ ویس برمک نے اندرون شہر کے علاقے کمپنی میں طالبان جنگجوؤں سے نہ صرف ہاتھ ملایا بلکہ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے، کہ وزیرداخلہ کے ساتھ طالبان نے تصاویر بنا رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں