.

بپتسمہ دیتے ہوئے پادری نے رونے پر بچے کے منہ پرتھپڑ مار دیا

واقعے کی ویڈیو وائرل، پادری پر کڑی تنقید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک وڈیو فوٹیج میں ایک پادری کو نومولود بچے کو بپتسمہ دیتے ہوئے اس کے رونے پر منہ پر تھپڑ مارتے دیکھا جاسکتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ’یوٹیوب‘ پر پوسٹ اس ٹویج کو اب تک ہزاروں لوگ دیکھ چکے ہیں اور اس پر تبصرے بھی کررہے ہیں۔

فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک خاندان اپنے بچے کو بپتسمہ دلوانے کے لیے ایک پادری کے پاس لے کرآتے ہیں۔ وہ عیسائی مذہبی روایت کے مطابق بچے کو بپتسمہ [غسل مقدس] دلانے کی کوشش کرتا ہے مگر بچہ بہت زیادہ رو رہا ہے۔ بچے کے والدین اسے چپ کرانے کی کوشش کرتے ہیں مگر وہ بچہ مسلسل رو رہا ہے۔ اس پر طیش میں آ کر پادری نے بچے کے منہ پر تھپر جڑ دیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی فوٹیج پر لوگوں نے پادری کی جانب سے بچے کو تھپڑ مارنے پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ آیا ایک پادری کیسے کم سن بچے کو چپ کرانے کے لیے اس کے منہ پر تھپڑ مارتا ہے۔ بچے کو تھپڑ مارے جانے پر اس کے والدین بھی پریشان ہیں اور انہوں نے بھی پادری کی اس حرکت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

برطانیہ میں پیش آنے والے اس واقعے کی تفصیلا اخبار ’ دی سن‘ بھی شائع کی ہیں اور پادری کی جانب سے بچے کو تھپڑ مارنے کو ’خوفناک‘ حرکت قرار دیا ہے۔ تھپڑ مارنے کے فوری بعد ایک خاتون بچے کو پادری کے ہاتھ سے لے لیتی ہے۔