.

شام ، عراق اور لبنان ہمارے اگلے مورچے ہیں:پاسداران انقلاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی عہدیدار آئے روز اپنے بیانات میں عرب ممالک میں تہران کی عسکری مداخلت کا فخر کے ساتھ اظہار کرتے ہیں۔

ایرانی پاسداران انقلاب کے ڈپٹی چیف جنرل حسین سلامی نے بھی خطے میں ایرانی مداخلت پر مسرت اور فخر کا اظہار کرتے ہوئے عرب ممالک میں مداخلت کا اعتراف کیا ہے۔

خبر رساں ادارے’ایسنا‘ کے مطابق جنرل حسین سلامی نے مشہد میں قائم جامعہ فردوسی میں ایک تقریب سے خطاب میں کہا کہ ’ایران دشمن کے خلاف جنگ کو طویل مسافت پر منتقل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عراق، شام اور لبنان میں ہمارے اگلے مورچے موجود ہیں اور ایران اپنے دشمنوں کے خلاف ان مورچوں سے جنگ جاری رکھے گا۔

خیال رہے کہ ایرانی سپاہ پاسداران انقلاب کے بیرون ملک سرگرم عسکری گروپ فیلق القدس کو تہران کی جانب سے اسلحہ اور فنڈز فراہم کیے جاتے ہیں جو عراق، شام ، لبنان اور یمن میں اپنے وفادار گروپوں کی مدد کررہا ہے۔

جنرل حسین سلامی کا کہنا تھا کہ زمانہ جیسے جیسے گذر رہا ہے’ہمارا انقلاب‘ اور بڑا اور مضبوط ہو رہا ہے اور دشمن کے ساتھ ہمارے نقاط تماس مزید وسیع ہو رہے ہیں۔