.

چند ہفتوں کے اندر جوہری معاہدے سے نکل جائیں گے:ایران

جوہری معاہدہ’انتہائی نگہداشت وارڈ‘ میں ہے:عراقجی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے نائب وزیر خارجہ عباس عراقجی نے کہا کہ تہران کے جوہری پروگرام کے حوالے سے طے پایا معاہدہ آخری سانسیں لے رہا ہے اور چند ہفتوں کے بعد ایران اس معاہدے سے نکل جائےگا۔

’یورو نیوز‘ چینل کو دیے گئے ایک انٹرویو میں عباس عراقجی نے کہا کہ جوہری سمجھوتہ ’انتہائی نگہداشت‘ وارڈ میں ہے اور وہ آخری سانسیں لے رہا ہے۔ چند ہفتوں کے بعد اس کا کوئی وجود نہیں ہوگا۔

ایک سوال کے جواب میں ایرانی عہدیدار کا کہنا تھا کہ یورپی ممالک کے ساتھ جوہری سمجھوتے کی بقاء کے لیے مذاکرات جاری رکھنے کا ویژن واضح نہیں۔ امریکا کے معاہدے سے نکل جانے کے بعد اس کے توازن کو قائم رکھنا مشکل ہوگیا ہے۔

عباس عراقجی کا کہنا تھا کہ اگر یورپی ممالک سمیت معاہدے کے تمام فریق اس کی حفاظت کرنا چاہیں تو انہیں ان سب کو بڑی قربانی دینا ہوگی بالخصوص امریکا کے علاحدہ ہونے اور ایران پر دوبارہ پابندیوں کے حوالے سے دنیا کو کئی مشکلات سے گذرنا پڑ سکتا ہے۔
ایک دوسرے سوال کے جواب میں ایرانی مذاکرات کار کا کہنا تھا کہ یورپ جوہری سمجھوتے کے حوالے سے ایک اچھے پولیس اہلکار کا کردار ادا کررہا ہے مگر ہمیں یورپ کے طریقہ کار سے کوئی دلچسپی نہیں۔ یورپی ممالک کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ وہ ایران یا امریکا میں سے کس کے ساتھ ہیں۔