.

حوثیوں نے بھاری جانی نقصان کے بعد الحدیدہ بندر گاہ کی جانب جانے والی شاہراہیں بند کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حوثی ملیشیا نے ساحلی شہر الحدیدہ کو مزید لڑائی کے بغیر یمنی فوج کے حوالے کرنے کے بجائے مکینوں کے گرد گھیرا تنگ کرنے کے لیے اپنی تیاریاں جاری رکھی ہوئی ہیں۔انھوں نے شہر کے ارد گرد مزید بارودی سرنگیں بچھا دی ہیں۔ حوثی جنگجو مزید خندقیں کھود رہے ہیں ۔ انھوں نے شہر سے بندرگاہ کی جانب جانے والے راستوں کو بھی منقطع کردیا ہے اور کنکریٹ کی رکاوٹیں جگہ جگہ کھڑی کردی ہیں۔

حوثی ملیشیا نے اس کے علاوہ اپنے جنگجوؤں میں سیکڑوں موٹر سائیکل تقسیم کیے ہیں اور انھیں شہر کے مختلف علاقوں اور چوراہوں میں تعینات کردیا ہے۔اس کے علاوہ انھیں مشین گنوں سمیت بھاری ہتھیار بھی مہیا کیے گئے ہیں ۔

دوسری جانب میڈیا کے ذریعے یہ اطلاع سامنے آئی ہے کہ الحدیدہ میں حوثی ملیشیا کی ففتھ ملٹری زون کے کمانڈر میجر جنرل سعید ابو بکر الحریری منحرف ہوگئے ہیں اور انھوں نے یمنی فوج کی صفوں میں شامل ہونے کا اعلان کردیا ہے۔

دریں اثناء نہم ، صعدہ ، البیضاء اور لحج کے محاذوں پر یمنی فوج اور حوثی ملیشیا کے درمیان لڑائی جاری ہے۔عسکری ذرائع کے مطابق یمنی فوج کے ایک حملے میں حوثی ملیشیا کے کمانڈر بریگیڈئیر جنرل عبداللہ عوضہ اپنے متعدد ساتھیوں سمیت ہلاک ہوگئے ہیں۔