لیبیا: آئل فیلڈز کو وفاق کے بجائے پارلیمنٹ کے حوالے کرنے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

لیبیا کی فوج کی جنرل کمان کے سرکاری ترجمان احمد المسماری کے مطابق فوج کے سربراہ خلیفہ حفتر نے آئل فیلڈز اور آئل پورٹس کو طرابلس میں وفاق کی حکومت کے زیر انتظام تیل کے ادارے کے بجائے پارلیمنٹ کے زیر انتظام آئل کارپوریشن کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پیر کی شام ایک پریس کانفرنس کے دوران احمد المسماری کا کہنا تھا کہ حفتر کا یہ فیصلہ تحریری شکل میں جاری ہوا ہے۔ اس میں مذکورہ آئل فیلڈز اور پورٹس پر کنٹرول رکھنے والی فورسز کو ہدایت کی ہے کہ وہ ان مقامات کو نیشنل کارپوریشن کے حوالے کر دیں جس کا صدر دفتر بنغازی شہر میں ہے۔

ابھی تک تیل کی تنصیبات پر نیشنل آئل کارپوریشن کا کنٹرول ہے جو دارالحکومت طرابلس میں واقع ہے۔ یہ ہی ادارہ لیبیا کی تیل کی برآمدات کے معاملات چلا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں