.

ٹرمپ کے مشیر کی ایرانی اپوزیشن لیڈر سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی حکومت کے مشیر برائے قانون روڈی جولیانی نے جمعہ کی شام ایرانی اپوزیشن لیڈر اور قومی مزاحمتی کونسل کی چیئرپرسن مریم رجوی سے پیرس میں ملاقات کی۔ یہ ملاقات ایرانی اپوزیشن کی سالانہ کانفرنس سے ایک روز قبل ہوئی۔ آج ہفتے کو پیرس میں ایرانی اپوزیشن کی سالانہ کانفرنس کا انعقاد کیا جا رہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مریم رجوی کی ذاتی ویب سائیٹ پر پوسٹ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی مشیر قانون کے ساتھ ہونے والی ملاقات میں ایران کی داخلی صورت حال، ولایت فقیہ کےنظام کےخلاف عوام کے احتجاج اور حکومت کی طرف سے مظاہرین پر طاقت کے استعمال سمیت دیگرامور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

بیان میں امریکی مشیر قانون جولیانی کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ انہوں نے مریم رجوی سے ملاقات میں کہا کہ ایرانی رجیم نے قوم سے اقتدار سلب کر رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکی صدر اور وزیر خارجہ متعدد بار ایرانی رجیم کو کرپٹ اور اپنی عوام پر مظالم کے مرتکب قرار دے چکے ہیں۔

دوسری جانب ایرانی اپوزیشن رہ نما مریم رجوی کا کہنا ہے کہ ایران میں حکومت کی طرف سے طاقت کے استعمال کے باوجود عوامی احتجاج کی مہم جاری رہے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ کریک ڈاؤن اور شہریوں پر طاقت کے استعمال سے ظالم نظام کے خلاف جاری صدائے احتجاج بند نہیں کی جاسکتی۔

مریم رجوی کا کہنا تھا کہ ایران کے موجودہ سماجی حالات اب پیچھے کی طرف واپس نہیں جاسکتے۔ عوام اور مزاحمتی کونسل کے ہاتھوں ایرانی رجیم کا خاتمہ نوشتہ دیوار ہے۔

امریکی مشیر روڈی جولیانی نے پیرس میں آج ہفتے کے روز ایرانی اپوزیشن کی کانفرنس کو اہمیت کی حامل قرار دیا اور کہا کہ یہ کانفرنس ایرانی اپوزیشن قوتوں کو ظالم نظام کے خلاف متحد ہونے کا موقع فراہم کرے گی۔