برطانیہ : 8 بچوں کے قتل کے شُبہے میں خاتون طبّی کارکن حراست میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ کے شمال مغربی علاقے چیسٹر میں حکام نے ایک ہسپتال میں کام کرنے والی خاتون طبّی کارکن کو حراست میں لے لیا۔ پولیس کے مطابق مذکورہ خاتون پر شُبہ ہے کہ اس نے آٹھ نومولود بچوں کو قتل کیا اور چھ دیگر بچوں کو جان سے مار ڈالنے کی کوشش کی۔

مئی 2017ء میں حکام نے مذکورہ ہسپتال میں جون 2015ء سے جون 2016ء کے درمیان 15 بچوں کی وفات کے حوالے سے تحقیقات کا آغاز کیا تھا۔

اسی تحقیقات کے نتیجے میں منگل کے روز ایک خاتون کو حراست میں لے لیا گیا جو ہسپتال کی میڈیکل ٹیم میں کام کرتی ہے۔ ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ آیا یہ خاتون ڈاکٹر ہے یا نرس ہے اور یا پھر ان کے علاوہ کچھ اور ہے۔

اس سلسلے میں ایک تحقیق کار پال ہیوز نے بتایا کہ "یہ تحقیقات انتہائی پیچیدہ اور حسّاس نوعیت کی ہیں۔ ہمیں آخری حد تک کوشش کرنا ہو گی تا کہ ان بچوں کی وفات یا ان کی بے ہوشی کی وجہ کو باریکی کے ساتھ جان سکیں"۔ پال کے مطابق ہسپتال میں کام کرنے والی ایک خاتون کارکن کی حراست اہم پیش رفت ہے تاہم تحقیقات ابھی جاری ہیں۔

تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے اب مارچ 2015 سے جون 2016ء کے درمیانی عرصے میں طبّی مسائل کے سبب فوت ہونے والے 17 اور متاثر ہونے والے 15 بچوں کو تحقیقات میں شامل کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں