مصر کے فوجی افسروں کو آئینی تحفظ حاصل، وزراء کے برابر پروٹوکول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصری پارلیمنٹ کی قومی سلامتی کمیٹی نے ایک نئے آئینی بل کی منظوری دی ہے جس کے تحت فوج کے سینیر افسران کو آئینی تحفظ حاصل ہونے کے ساتھ انہیں وزراء کے برابر پروٹو کول دیاجائے گا۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق پارلیمنٹ نے اس مجوزہ آئینی بل کی ابتدائی منظوری دیتے ہوئے دفاع اور قومی سلامتی کمیٹی، دستوری کمیٹیوں، آئین ساز کمیٹی، پلاننگ، بجٹ کمیٹی اور خارجہ تعلقات کمیٹیوں پر مشتمل جوائنٹ کمیٹی کونئے بل کے حوالے سے سفارشات مرتب کرنے کی سفارش کی ہے۔

اس قانون کی منظوری کے بعد مسلح افواج کے وہ افسران جو عمر بھر مسلح افواج کی خدمت پر مامور رہے ہوں ان سے ساتھ ایک وزیر کی طرح برتاؤ کیا جائے گا۔ ایسے افسران کو حکومت کے ایک وزیر کے برابر پروٹوکول اورمراعات حاصل ہوں گی۔

فوجی افسران کو آئینی تحفظ دینے اور انہیں وزیر کےمساوی مراعات دینے کے حوالے سے حتمی فیصلہ صدر مملکت کی طرف سے کیا جائے گا۔ اس قانون کے تحت بیرون ملک سفر کرنے والے فوجی افسران کو سفارت کاروں اور سربراہان مملکت کی طرح سروس کے عرصے میں مکمل آئینی تحفظ حاصل ہوگا۔ اس قانون کی منظوری کے بعد حاضر سروس فوجی افسران کے خلاف براہ راست کسی قسم کی قانونی یا عدالتی کارروائی نہیں کی جاسکے گی۔ تاہم کسی بھی فوجی افسر کے خلاف قانونی کارروائی کا اختیار مسلح افواج کی سپریم کونسل کے پاس ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں