گولن نیٹ ورک سے تعلق کے شبے میں 271 ترک فوجی گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

تُرکی کے ذرائع ابلاغ کے مطابق پولیس نے دو سال قبل بغاوت میں معاونت اور جلا وطن لیڈر فتح اللہ گولن کی تنظیم سے وابستگی کے شبے میں کم سے کم 271 فوجیوں کو حراست میں لے لیا ہے۔

تُرکی سے نشریات پیش کرنے والے’ٹی آر ٹی نیوز‘کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے کئی صوبوں میں گولن نیٹ ورک سے تعلق رکھنے والے عناصر کے خلاف کریک ڈاؤن میں 271مشتبہ ’باغیوں‘ کو حراست میں لیا ہے۔ پولیس کو شبہ ہے کہ گرفتار کیے گئےافراد امریکا میں خود ساختہ جلا وطنی کی زندگی گذارنے والے مذہبی رہ نما فتح اللہ گولن نیٹ ورک سے منسلک ہیں۔

ترک اخبار’اسٹار‘ کے مطابق گرفتار ہونے والوں میں فوج کے حاضر سروس اور ریٹائرڈ اہلکار شامل ہیں جن میں سے 10 کرنل کے عہدے کے افسر ہیں جب کہ متعدد ریٹائرڈ جرنیل بھی گرفتار کیے گئے ہیں۔

ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق ترکی انسداد دہشت گردی پولیس نے جمعہ کو علی الصباح استنبول میں گولن نیٹ ورک کے حامیوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا۔

خیال رہے کہ ترکی میں جولائی 2016ء کو ملک میں ناکام بغاوت برپا کرنے میں ملوث عناصر کے خلاف کریک ڈاؤن پر اقوام متحدہ نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔ اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے انسانی حقوق کے مطابق دو سال کے دوران عراقی پولیس نے بغاوت میں ملوث ہونے کے شبے میں ایک لاکھ ساٹھ ہزار افراد کو گرفتار کیا جب کہ ہزاروں سرکاری ملازمین کو ملازمتوں سے محروم کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں