.

سعودی عرب اقوام متحدہ کی اپیل پر یمن کے لیے سب سے زیادہ انسانی امداد دینے والا ملک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے یمن کے لیے اقوام متحدہ کے ’’انسانی امداد ردعمل منصوبے ‘‘کے تحت 53 کروڑ چار لاکھ ڈالرز عطیہ کے طور پر دیے ہیں۔

اقوام متحدہ کےرابطہ کاری دفتر برائے انسانی امور نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ مختلف ممالک نے یمن کے لیے ایک ارب 54 کروڑ ڈالرز کی امداد دی ہے اور اس میں سعودی عرب کا حصہ سب سے زیادہ ہے۔جو ممالک یمن کے لیے انسانی امدادی ردعمل منصوبے کا حصہ نہیں ،انھوں نے بھی 19 کروڑ 60 لاکھ ڈالرز عطیہ کیے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اس انسانی امدادی ردعمل منصوبے کے تحت اکٹھی ہونے والی رقوم کو یمن میں خوراک کے تحفظ ، زراعت ، صحت ، پانی ، حفظانِ صحت اور صفائی ، خوراک ، تعلیم،شیلٹر اور یمنی عوام کی دوسری ضروریات پر صرف کیا جائے گا۔

یمن کے لیے اقوام متحدہ کے تحت کام کرنے والی انسانی امدادی ایجنسیوں کا یہ سب سے بڑا منصوبہ ہے ۔اس کے مقاصد میں انسانی زندگیوں کو بچانا، شہریوں کا تحفظ ، امداد تک تمام شہریوں کی مساویانہ انداز میں رسائی اور انسانی بھلائی کے کام کرنے والی تنظیموں کے لیے امداد کے تسلسل کو یقینی بنانا ہے۔

اس منصوبے کے تحت یمن میں بین الاقوامی امدادی ایجنسیوں اور تنظیموں کو بیرون سے امداد مہیا کرنے کے لیے جامع انسانی کارروائیاں جاری ہیں۔