.

لبنان میں امام مسجد کا اشاروں کی زبان میں خطبہ جمعہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے دارالحکومت بیروت میں ملک کی تاریخ میں پہلی بار ایک ایسی مسجد قائم کی گئی ہے جس میں گونگے اور بہرے افراد کی سہولت کےلیے خطبہ جمعہ کا فوری طورپر اشاروں کی زبان میں ترجمہ کیا جاتا ہے۔

خبر رساں ادارے’اناطولیہ‘ کے مطابق مسجد حمزہ الشیخ غسان شوقی کی سرپرست ’جمعیت الارشاد والاصلاح الخیریہ‘ کے چیئرمین اور مسجد کے امام جمال محیو نے خطبہ جمعہ میں اشاروں کی زبان کی سہولت فراہم کی تاکہ مسجد میں نماز کے لیے آنے والے گونگے اور بہرے افراد بھی خطبہ جمعہ سے مستفید ہوسکیں۔ لبنان میں اپنی نوعیت کی یہ پہلی مسجد ہے۔

اشاروں کی زبان کے ماہر بلال عزو نے بتایا کہ خطبہ جمعہ کو اشاروں کی زبان میں تبدیل کرنے کا تخیل ان کے ذہن میں پیدا ہوا اور انہوں نے مسجد حمزہ کےامام کے سامنے یہ تجویز پیش کی۔ انہوں نے اس کا خیرمقدم کیا اور مجھ ہی سے اس ذمہ داری کی انجام دہی کی درخواست کی۔ عزو کا کہنا ہے کہ بہت سے بہرے افراد فیس بک کے ذریعے ان سے خطبہ جمعہ کا اشاروں میں ترجمہ کرنے کا تقاضا کرچکے ہیں۔