.

امریکی یونیورسٹی رواں ہفتے سعودی عرب کا پرچم کیوں لہرائے گی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ریاست کونی ٹیکٹ میں قائم ہاروڈ یونیورسٹی دو بچوں کو ڈوبے سے بچاتے ہوئے اپنی جانوں کی قربانی دینے والے دو سعودی طلباء کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے رواں ہفتے سعودی عرب کا قومی پرچم لہرائے گی۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق ہاروڈ یونی ورسٹی کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کے دو طلباء ذیب آل راکہ الیامی اور جاسر آل راکہ الیامی چند روز قبل دو بچوں کو پانی میں ڈوبنے سے بچانے کی کوشش کے دوران خود ڈوب کر جاں بحق ہوگئے تھے۔

یونی ورسٹی کا کہنا ہے کہ دونوں سعودی طلباء نے جاں بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بچوں کی جانیں بچالیں مگر خود ایک عظیم انسانی خدمت انجام دے کر ہمیشہ کے لیے امر ہوگئے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں سعودی طلباء کی ناقابل فراموش قربانی کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا اور بچوں کی جانیں بچاتے ہوئے اپنی جانی قربان کرنے کے کے ان کے جذبے کی ہمیشہ تکریم کی جائے گی۔

ادھرشہید ہونے والے آل راکہ کے اور اس کے چچا زاد جاسر کے بھائی عوض آل راکہ نے’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ دونوں بھائی گذشتہ جمعہ کو ریاست ماسا چیوسٹس کے دریائے شیکوبی میں پیراکی کے لیے گئے جہاں انہوں نے دو بچوں کو پانی میں ڈوبتے دیکھا۔ ڈوبتے بچوں کو بچانے کے لیے دونوں دریا میں کُود گئے۔ دونوں سعودی نوجوان پانی کی لہروں کامقابلہ کرتے ہوئے بچوں کو بچانے میں کامیاب ہوگئے مگرپانی کی ایک لہر نے انہیں دبوچ لیا اور وہ دونوں ڈوب کر شہید ہوگئے۔

دونوں طلباء کے جسد خاکی سعودی عرب پہنچا دیے گئے ہیں۔ شہداء کے والدین اور دیگر اقارب نے خادم الحرمین الشریفین اور نجران کےگورنر کی جانب سے بچوں کی حادثاتی موت پر اظہار افسوس پر ان کا خصوصی شکریہ ادا کیا ہے۔