.

فرانس کی ٹیم کروشیا کو چار -دو سے ہراکر فٹ بال کی دوسری مرتبہ عالمی چیمپئن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کروشیا کو دو کے مقابلے میں چار گول سے ہراکر فٹ بال کا نیا عالمی چیمپئن بن گیا ہے۔فرانس نے دوسری مرتبہ عالمی کپ جیتا ہے۔اس سے پہلے 1998ء میں اس نے عالمی چیمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

روس کے دارالحکومت ماسکو کے لوژینکی اسٹیڈیم میں اتوار کی شب کھیلے گئے فیفا عالمی کپ فٹ بال ٹورنا منٹ کے فائنل میچ میں فرانس کی ٹیم نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور پورے میچ کے دوران میں اس کا پلڑا بھاری رہا ہے۔ اس نے پہلے ہاف میں دو ایک سے برتری حاصل کر لی تھی اور دوسرے ہاف میں دو اورگول کیے تھے۔

فرانس کی ٹیم نے عالمی اعزاز کے حصول کے لیے پہلے ہاف میں کروشیا کے خلاف پہلے گول کرکے برتری حاصل کرلی لیکن یہ گول اس کے کھلاڑی گریز من کی براہ راست کک پر نہیں ہوا تھا بلکہ کروشیا کے کھلاڑی منڈو زو کیچ کے ہیڈ سے بال ان کے اپنے ہی نیٹ میں چلی گئی۔یہ پہلا موقع ہے کہ کسی عالمی کپ کے فائنل میں کسی کھلاڑی نے اپنی ہی ٹیم کو گول کیا ہے۔

اس کے تھوڑی دیر کے بعد کروشیا کےپیری سیچ نے فرانس کو گول کرکے میچ ایک ایک سے برابر کردیا مگر فرانسیسی فارورڈ گریز من نے پینلٹی پر شاندار گول کرکے اپنی ٹیم کو ایک مرتبہ پھر برتری دلا دی۔انھوں نے اپنے بائیں طرف فٹ بال کو کک لگائی جبکہ کروشیا کے گول کیپر نے مخالف سمت میں ڈائیو لگائی اور یوں وہ گول بچانے میں ناکام رہے۔

فرانسیسی ٹیم میچ کے دوسرے ہاف میں کروٹ ٹیم پر چھائی رہی ہے اور اس نے مزید دو گول کرکے اپنی برتری چار دو کردی۔کروشیا کی ٹیم نے دوسرے ہاف میں دوسرا گول کیا تھا مگر فرانس کی دو گول کی برتری مقررہ وقت تک برقرار رہی اور اس طرح اس نے دوسری مرتبہ فٹ بال کا عالمی چیمپئن ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا ہے۔کروشیا کی ٹیم پہلی مرتبہ فٹ بال عالمی کپ کا فائنل میچ کھیل رہی تھی اور اس نے اس ٹورنا منٹ میں مجموعی طور پر اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا ہے۔

اس فائنل میچ میں فرانس اور کروشیا نے سیمی فائنل میچ کھیلنے والی اپنی اپنی ٹیموں میں کوئی تبدیلی نہیں کی تھی۔واضح رہے کہ فرانس کی فٹ بال ٹیم نے اس ٹورنا منٹ کے ناک آؤٹ مرحلے کے تینوں میچوں میں مقررہ 90 منٹ میں کامیابی حاصل کی تھی اور اس نے فائنل میں بھی اس روایت کو برقرار رکھا ہے جبکہ کروشیا کی ٹیم اضافی وقت میں اپنے میچ جیتنے میں کامیاب ہوئی تھی۔