جوہری معاہدے کے حوالے سے یورپ کے قول اور فعل میں تضاد ہے: جواد ظریف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کا کہنا ہے کہ جوہری معاہدے کی پاسداری کے حوالے سے یورپ کے قول اور فعل میں مطابقت نہیں ہے۔

یہ بیان اس امر کی عکاسی کرتا ہے کہ جوہری معاہدے سے امریکا کی علاحدگی کے بعد تہران شدید تنگی میں ہے بالخصوص جب کہ وہ معاہدے کو بچانے میں یورپی ممالک پر انحصار کر رہا تھا۔

ایرانی سرکاری ایجنسی کے مطابق جواد ظریف کا یہ موقف ہفتے کے روز وزارت خارجہ کے متعدد عہدے داروں سے خطاب کے دوران سامنے آیا۔ ان شخصیات میں سفراء، ناظمین امور اور دیگر اہل کار شامل تھے۔

جواد ظریف نے امریکا پر الزام عائد کیا کہ وہ ایران کو توڑنے کے منصوبے پر عمل پیرا ہے اور تہران پر دباؤ کے لیے وار روُم تشکیل دے رہا ہے تا کہ اُسے جھکنے پر مجبور کر دے۔ ایرانی وزیر خارجہ کے مطابق واشنگٹن کا مقصد "تہران کے نظام کا مقابلہ کرنا یا اس کے رویّے کو تبدیل کرنا نہیں" بلکہ ایران کو تقسیم کرنا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے یورپی ممالک کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے الزام عائد کیا کہ جوہری معاہدے کے سلسلے میں ان ممالک کا قول اور فعل ایک سا نہیں۔

جب کبھی بیرونی دباؤ بڑھتا ہے یا ایران میں احتجاجات کا سلسلہ وسیع ہوتا ہے تو ایرانی عہدے داران ایران کو توڑنے یا داخلی تنازع میں شام جیسے نمونے میں تبدیل ہو جانے کے خطرے سے متنبہ کرنے کا سہارا لیتے ہیں۔

امریکی صدر نے رواں برس جنوری میں ایران کے مختلف شہروں میں پھیل جانے والے مظاہروں کے لیے اپنی حمایت کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے اپنی ٹوئیٹ میں باور کرایا تھا کہ "تبدیلی کا وقت آ گیا ہے"۔

اپنے خطاب میں محمد جواد ظریف نے جوہری معاہدے کا دفاع کیا۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ بہت سے ممالک امریکی اقتصادی دباؤ کے سامنے لیٹ گئے۔ جواد ظریف کا اشارہ اُن ممالک کی جانب تھا جنہوں نے تہران کے خلاف امریکی پابندیوں کے دوبارہ نافذ العمل ہونے کے بعد ایران سے اپنی کمپنیوں کو واپس بُلا لیا ہے۔

جواد ظریف کا کہنا تھا کہ "اگرچہ ہم جوہری معاہدے کے حوالے سے یورپی ممالک کے ساتھ مذاکرات جاری رکھیں گے تاہم ہم اُن کا انتظار نہیں کریں گے اور ہم اس امر کے واسطے منصوبہ بندی کر رہے ہیں کہ تیل کی برآمد اور ملک کو مطلوب ضروریات کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے بین الاقوامی اتفاق رائے کو ممکن بنایا جائے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں