.

ایرانی مترجم نے پومپیو کے خطاب میں "اہواز کے عربوں کو کچلے جانے" کا جُملہ حذف کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے صوبے الاہواز میں انسانی حقوق کی تنظیم نے وائس آف امریکا VOA فارسی زبان کی سروس کے اُس اقدام پر سخت احتجاج کیا ہے جس میں امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کے خطاب کے ترجمے کے دوران الاہواز کے عربوں کے خلاف کریک ڈاؤن سے متعلق عبارت کو حذف کر دیا گیا تھا۔

مذکورہ تنظیم کے بیان میں کہا گیا ہے کہ اتوار کے روز کیلیفورنیا میں ایرانی کمیونٹی کے سامنے خطاب کے دوران امریکی وزیر خارجہ نے کہا تھا کہ "ایران میں الاہواز عرب اقلیت سے تعلق رکھنے والے افراد جب اپنی زبان اور بنیادی عقائد کے احترام کا مطالبہ کرتے ہیں تو ایرانی نظام سیکڑوں لوگوں کی گرفتاری عمل میں لاتا ہے"۔

تاہم وی او اے کے فارسی زبان کے مترجم نے خطاب کے فوری ترجمے میں کہا کہ "ایرانی نظام صرف 'اہوازی' (اقلیت) کے سیکڑوں افراد کو ان کے عقائد اور نظریات کے سبب گرفتار کر رہی ہے۔ "

تنظیم کے بیان کے مطابق اگر فرض کیا جائے کہ مترجم کو "اہوازيوں" کا لفظ درست طریقے سے سمجھ نہیں آیا اور اس نے اس کا ترجمہ "ازہاری" سے کر دیا تو یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ مترجم نے مائیک پومپیو کی زبان سے نکلی عبارت "ایران میں عرب اقلیت" بھی نہیں سُنی۔ تنظیم نے مزید استفسار کیا ہے کہ آیا مترجم کا یہ فعل دانستہ تھا یا پھر کوئی بُھول ہوئی؟

اہواز میں انسانی حقوق کی تنظیم کا کہنا ہے کہ وہ پیر کے روز سے حرکت میں آ چکی ہے اور امریکی حکومت میں متعلقہ حکام سے خط و کتابت بھی کی ہے تا کہ اس معاملے کو درست کیا جا سکے اور مذکورہ چینل کی جانب سے وضاحت جاری کی جائے۔

تنظیم کے مطابق فارسی زبان کے دیگر امریکی اسٹیشنوں مثلا "ریڈیو فردا" وغیرہ نے بھی اس موضوع پر روشنی نہیں ڈالی۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ یہ اسٹیشنز اقلیتوں کی آواز کو کمزور کرنے کی پرانی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

مذکورہ تنظیم کے سربراہ ڈاکٹر کریم عبدیان سعید نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اہواز اور دیگر تمام اقلیتوں کا معاملہ امریکی انتظامیہ کے درودیوار میں پہنچ چکا ہے اس کی بنیادی وجہ ان قومیتوں کے کارکنان کا بین الاقوامی پلیٹ فارمز پر متحرک ہونا اور امریکی انتظامیہ کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہنا ہے۔

ڈاکٹر عبدیان کے مطابق فارسی زبان کے امریکی اسٹیشنز پہلے مکمل طور پر ایرانی لابی کے زیر اثر تھے اور ایرانی قومیتوں اور اقلیتوں کی آوازوں پر پردہ ڈال دیا جاتا تھا تاہم نئی انتظامیہ کی آمد کے ساتھ ہی قابل غور تبدیلیاں واقع ہوئی ہیں اگرچہ یہ ابھی مطلوبہ سطح تک نہیں پہنچی ہیں۔ اہوازیوں کا علاقہ ملک کے 80% تیل اور ثروت کا حامل ہے مگر یہاں کے رہنے والوں کو کمزور کیے جانے اور نسلی تطہیر کے عمل کا سامنا ہے۔ امریکی وزیر خارجہ کی جانب سے اہوازیوں کی اذیت کے ذکر کو نمایاں طور پر پیش کیا جانا چاہیے۔

تنظیم نے مطالبہ کیا کہ VOA Persian" اور Broadcasting Board of Governors " کو اپنے موقف کے حوالے سے وضاحت پیش کرنا چاہیے اور مترجم سے سرزد ہونے والی غلطی کی تصحیح کرنا چاہیے تا کہ امریکا کے جمہوری سرکاری میڈیا میں ایران کی عرب اہوازی اقلیت کی آواز کو چھپایا نہ جا سکے۔