.

واشنگٹن نے شمالی کوریا کی میزائل فیکٹری میں پھر سے سرگرمیوں کا پتہ لگا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جنوبی اور شمالی کوریا کے درمیان منگل کے روز عسکری نوعیت کی بات چیت ہوئی ہے۔ یہ بات چیت امریکا کے اُس انکشاف کے بعد کشیدگی میں اضافے کے بیچ ہو رہی ہے جس میں واشنگٹن کا کہنا ہے کہ پیونگ یانگ کے قریب میزائل فیکٹری میں ایک بار پھر سرگرمیوں کا معلوم ہوا ہے۔

جنوبی کوریا کی سرحد کے نزدیک واقع شمالی کوریا کے گاؤں پانمونجوم میں ہونے والا یہ اجلاس جون کے بعد سے فریقین کے درمیان دوسری ملاقات ہے۔ ملاقات کا مقصد کشیدگی کے خاتمے اور تمام معاندانہ کارروائیوں کے روکے جانے کے حوالے سے اُس موقف پر کام جاری رکھنا ہے جس پر رواں برس اپریل میں دونوں کوریاؤں کے سربراہان نے آمادگی کا ظاہر کی تھی۔

جنوبی کوریا کے سینئر مذاکرات کار اور وزارت دفاع میں شمالی کوریا سے متعلق پالیسی کے ذمّے دار کِم ڈو جیون نے صحافیوں کو آگاہ کیا کہ وہ کشیدگی کو ختم کرنے اور اعتماد سازی کے لیے "مرکزی" نوعیت کے اقدامات یقینی بنانے کی پوری کوشش کریں گے۔

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع نے گزشتہ ہفتے بتایا تھا کہ وہ سمجھوتے کی سمت پہلے قدم کے طور پر شدید طریقے سے قلعہ بند سرحد پر پھیلے پہرے داری کے ٹھکانوں اور ساز و سامان میں کمی کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

ادھر ایک سینئر امریکی ذمّے دار نے پیر کے روز برطانوی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے شمالی کوریا کی ایک فیکٹری میں ایک بار پھر سرگرمیوں کا پتہ چلایا ہے جس نے بین البراعظمی بیلسٹک میزائل تیار کر لیا۔ یہ میزائل امریکا تک پہنچنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے گزشتہ ہفتے سینیٹ میں خارجہ تعلقات کی کمیٹی کو بتایا کہ شمالی کوریا نے جوہری بم سے متعلق ایندھن کی تیاری کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ یہ پیش رفت گزشتہ ماہ سنگاپور میں شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کے باوجود سامنے آئی ہے۔ کِم نے اس ملاقات میں عہد کیا تھا کہ وہ جوہری ہتھیاروں کی تلفی پر کام کریں گے۔

دوسری جانب شمالی کوریا کے میڈیا نے گزشتہ چند روز میں جنوبی کوریا کو کڑی نکتہ چینی کا نشانہ بنایا ہے۔

شمالی کوریا میں حکمراں جماعت کے سرکاری اخبار "Rodongja Sinmun" کا کہنا ہے کہ سیؤل حکومت خود سے کوئی ایک قدم اٹھائے بغیر ،،، جوہری ہتھیاروں کی مکمل تلفی کے بعد پابندیاں اٹھائے جانے کے انتظار میں "وقت ضائع" کر رہی ہے۔