.

انڈونیشیا میں شدید زلزلہ آنے پر مسجد میں نماز ادا کرتے افراد نے کیا کِیا ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انڈونیشیا کے جزیرے لومبوک کی ایک مسجد میں نصب سکیورٹی کیمرے کی وڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں 29 جولائی کو ملک میں آنے والے شدید زلزلے کے دوران نمازیوں کے مسجد سے بھاگ کر نکلنے کا منظر دیکھا جا سکتا ہے۔

سوشل میڈیا پر زیر گردش وڈیو کلپ میں نظر آ رہا ہے کہ صف میں باجماعت نماز ادا کرنے والے افراد زلزلے کے جھٹکوں میں شدّت آنے پر نماز توڑ کر مسجد سے باہر نکل گئے جس کے فورا بعد ہی مسجد کی چھت کا کچھ حصّہ اُس جگہ پر آ گرا جہاں نماز ہو رہی تھی۔

اتوار کے روز انڈونیشیا کے جزیرے لومبوک میں آنے والے زلزلے کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 91 ہو چکی ہے جب کہ کم از کم 209 افراد زخمی بھی ہوئے۔

امریکی جیولوجی سروے انسٹی ٹیوٹ کے مطابق زلزلے کی گہرائی زمین میں 10 کلو میٹر نیچے تھی اور ریکٹر اسکیل پر اس کی شدّت 6.9 ریکارڈ کی گئی۔

انڈونیشیا میں قدرتی آفات سے نمٹنے کے ادارے کا کہنا ہے کہ حالیہ زلزلے کے نتیجے میں "سُونامی" کی موجیں بننے سے متعلق الارم بجنے لگا۔