عرب اتحاد نے یمن میں بس پر حملے میں جانی نقصان کی تحقیقات شروع کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عرب اتحاد کی قیادت نے یمن کے شمالی شہر صعدہ میں ایک بس پر فضائی حملے میں شہریوں کے ہونے والے جانی نقصان کی تحقیقات شروع کردی ہے۔ بین الاقوامی ریڈکراس کمیٹی اور خبررساں ایجنسیوں کے مطابق اس حملے میں انتیس یمنی بچے ہلاک اور کم سے کم پچاس افراد زخمی ہوگئے تھے۔

عرب اتحاد کے ایک سینیر ذریعے نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ان کی قیادت نے اس واقعے کی فوری تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے اور اس مقصد کے لیے اس کو ایک مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے سپرد کر دیا گیا ہے تاکہ جن حالات میں یہ واقعہ پیش آیا ہے،ان کے بارے میں کسی حتمی نتیجے تک پہنچا جاسکے۔

اس ذریعے نے اس موقف کا ا عادہ کیا کہ عرب اتحاد بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزیوں اور کسی غلط کاری سے متعلق تمام الزامات کی تحقیقات کرے گا، ان کے ذمے داروں کا احتساب کیا جائے گا اور تمام متاثرین کو ضروری امداد مہیا کی جائے گی ۔ نیز یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف کارروائی میں شہریوں کے جانی تحفظ کے لیے ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔

عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے جمعرات کو ایک بیان میں صعدہ میں حوثی عناصر کے خلاف ایک کارروائی شروع کرنے کی اطلاع دی تھی۔ ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے بدھ کی شب سعودی عرب کے شہر جازان کی جانب ایک بیلسٹک میزائل فائر کیا تھا ۔اس کے بعد عرب اتحاد نے ان کے خلاف کارروائی کا آغاز کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں