.

اقوام متحدہ کے سابق سیکریٹری جنرل کوفی عنان چل بسے !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سابق سیکریٹری جنرل اور نوبل امن انعام یافتہ کوفی عنان ہفتے کے روز مختصر علالت کے بعد وفات پاگئے ہیں۔ ان کی عمر 80 سال تھی اور وہ سوئٹزر لینڈ کے شہر برن میں ایک اسپتال میں زیر علاج تھے۔

کوفی عنان کا تعلق افریقی ملک گھانا سے تھا۔ ان کے نام سے قائم فاؤنڈیشن نے جنیوا میں ایک بیان میں ان کی وفات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ آخری وقت میں ان کی دوسری اہلیہ نین اور بچے اما ، کوجو اور نینا ان کے پاس تھے۔

کوفی عنان 1997ء سے 2006ء تک دو مرتبہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل رہے تھے۔وہ ریٹائرمنٹ کے بعد سوئٹزر لینڈ کے ایک گاؤں میں زندگی گزار رہے تھے۔ عالمی ادارے کے موجودہ سیکریٹری جنرل انتونیو گوٹیریس نے انھیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاہے کہ ’’ وہ بہت سے حوالوں سے خود ہی اقوام متحدہ تھے ۔وہ ترقی کرتے ہوئے اس تنظیم کی سربراہی کے عہدے پر فائز ہوئے تھے۔انھوں نے نئے ہزاریے کے آغاز میں بے مثال وقار اور عزم کے ساتھ عالمی ادارے کی قیادت کی تھی‘‘۔

عالمی ادارے کے سربراہ کی حیثیت سے انھوں نے دنیا میں مختلف تنازعات کے حل کے لیے اپنے طور پر کوششیں کی تھیں لیکن امریکا اور دوسری بڑی طاقتوں نے اقوام متحدہ کو عضو معطل بنائے رکھے تھے ۔بالخصوص سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش نے مارچ 2003ء میں عالمی ادارے کی منظوری کے بغیر عراق کے خلاف جنگ مسلط کی تھی جبکہ کوفی عنان نے اس جنگ کی مخالف کی تھی۔ انھوں نے دو حصوں میں منقسم جزیرے قبرص کے اتحاد کے لیے ایک منصوبہ پیش کیا تھا لیکن اس کو یونانی قبرص نے 2004ء میں ایک ریفرینڈم میں مسترد کردیا تھا۔

ان کے آبائی وطن گھانا کے صدر نانا عکوفو عدو نے بھی انھیں شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا ہے اور کہا ہے کہ انھوں نے ایک تجربے کار اور ماہر بین الاقوامی سفارت کار کی حیثیت سے اپنے ملک کا نام فخر سے بلند کیا تھا۔انھوں نے کوفی عنان کی وفات کے سوگ میں سوموار سے آیندہ ایک ہفتے تک پورے ملک میں اور بیرون ملک اس کے سفارتی مشنوں میں قومی پرچم کو سرنگوں رکھنے کا حکم دیا ہے۔