ملکی حالات پر چراغ پا ایرانی شہری کو ڈپٹی اسپیکر نے"احمق اور جاہل" کہہ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے ایک سابق رکن پارلیمنٹ حمید رسائی نے ٹویٹر پر ایک وڈیو کلپ پوسٹ کیا ہے جس میں ایک ایرانی شہری کو ایرانی پارلیمنٹ کے ڈپٹی اسپیکر علی مطہری پر "برستے" ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق مذکورہ شہری مطہری پر اس لیے چراغ پا ہوا کہ اُنہوں نے جمعرات کے روز مذہبی لیکچرز دینے کے لیے ایسے وقت میں اصفہان صوبے کے شہر کلبائکان کا رخ کیا جب کہ ملک کو ابتر اقتصادی صورت حال کا سامنا ہے اور عام شہری مہنگائی کے پہاڑ تلے دبا ہوا ہے۔

وڈیو میں غم وغصّے کا شکار ایرانی شہری لوگوں کو درپیش مسائل کے انبار اور قیمتوں میں اضافے بالخصوص مقامی تیار کردہ گاڑی پرائڈ کی قیمت 4.5 کروڑ تومان تک پہنچ جانے کے حوالے سے گفتگو کر رہا تھا۔ اس کے جواب میں مطہری نے کہا کہ "تم احمق اور جاہل ہو ۔۔۔ ہم یہاں مذہب کے بارے میں بات کرنے آئے ہیں"۔

اس دوران مطہری کے ہمراہ موجود ایک مذہبی شخصیت نے ایرانی شہری کو دھمکی آمیز لہجے میں کہا کہ "ہم تمہارے سر پر تھیلی چڑھا کر گرفتار کر لیں گے"۔

تاہم ایرانی شہری نے دلیری کے ساتھ ڈپٹی اسپیکر سے کہا کہ "تمہاری ذمے داری ہے کہ لوگوں کے مسائل کا جواب دو ۔۔۔ 300 کلومیٹر کا سفر کر کے دینی مواعظ کے لیے آنا تمہارا کام نہیں بلکہ مذہبی شخصیات کی ذمّے داری ہے"۔

اس طرح کے مناظر ایسے وقت میں سامنے آ رہے ہیں جب کہ مہنگائی، بے روزگاری، غیر ملکی کرنسیوں کی قیمتوں میں اضافے اور مقامی کرنسی کی شدید گراوٹ سے متعلق بحرانات جاری رہنے کے سبب عوامی احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔

کرنسی مارکیٹ میں ایک امریکی ڈالر کی قیمت 1.1 لاکھ ایرانی ریال (11 ہزار تومان) تک پہنچ چکی ہے جب کہ سونے کے سکوں کے نرخ 4 کروڑ ایرانی ریال سے تجاوز کر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں