.

فلپائن : انٹرنیٹ کیفے میں بم دھماکا، ایک شخص ہلاک ، 15 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلپائن کے جنوبی جزیرے منڈاناؤ میں واقع شہر ایسولان میں ایک انٹرنیٹ کیفے میں بم دھماکے کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور پندرہ زخمی ہوگئے ہیں۔

اس شہر میں گذشتہ ایک ہفتے میں یہ دوسرا بم دھماکا تھا۔28 اگست کو اس انٹرنیٹ کیفے سے چند قدم کے فاصلے پر ایک موٹر سائیکل کے ساتھ نصب بم کے دھماکے میں تین افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے تھے۔

ایسولان کے میئر کے دفتر نے اتوار کو انٹر نیٹ کیفے میں بم دھماکے میں ایک شخص کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ زخمیوں میں چار کی حالت تشویش ناک ہے۔فوری طور پر کسی گروپ نے اس بم حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے لیکن فلپائنی حکام نے داعش سے وابستہ جنگجو گروپ بنگ سا مورو اسلامک فریڈم فائیٹرز ( بی آئی ایف ایف ) پر اس حملے میں ملوث ہونے کا شُبہ ظاہر کیا ہے۔

فلپائنی آرمی کے جنرل سری لیٹو سوبجانا نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی اے ایف پی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ بی آئی ایف ایف گروپ اس حملے کا ذمے دار ہے۔یہ گروپ افراتفری پھیلانے کے لیے پھر میدان میں آگیا ہے‘‘۔

ان حالیہ بم دھماکوں سے چندے قبل ہی فلپائنی صدر روڈریگو ڈیوٹرٹ نے ملک کے جنوب میں مسلم اقلیت کو زیادہ خود مختاری دینے کے لیے ایک قانون کا نفاذ کیا ہے۔انھوں نے اس امید کا اظہار کیا تھا کہ اس سے علاقے میں جاری بحران کے خاتمے میں مدد ملے گی ۔تاہم بعض حکام اس تشویش کا بھی اظہار کرچکے ہیں کہ اس قانون سے بعض جنگجو دھڑوں کی شہریوں اور سکیورٹی فورسز پر حملوں کے لیے حوصلہ افزائی ہوسکتی ہے اور وہ امن عمل کے لیے کوششوں کو سبوتاژ کرسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ فلپائن کے جنوب میں متعدد مسلح گروپ سرکاری سکیورٹی فورسز کے خلاف برسرپیکا ر ہیں۔حکومت کے فراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق اس علاقے میں گذشتہ کئی عشرے سے جاری مسلح بغاوت کے دوران میں ایک لاکھ سے زیادہ افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔