.

کار ڈرائیور سعودی خواتین کی نئی مصروفیت ، بچوں کو اسکول چھوڑنا شروع کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں خواتین کی ڈرائیونگ پر عاید پابندی کے خاتمے کے دس ہفتے کے بعد بہت سے ڈرائیور ماؤں نے اب اپنے بچوں کو اسکول چھوڑنا اور وہاں سے واپس لانا شروع کردیا ہے۔

سعودی عرب میں نئے تعلیمی سال کا اتوار سے آغاز ہوا ہے۔اس موقع پر کار چلانے کی صلاحیت کی حامل بہت سے سعودی خواتین نے نئی تاریخ رقم کی ہے ۔انھوں نے اپنی گاڑیوں پر بچوں کو کسی ڈرائیور کے ساتھ نہیں بھیجا بلکہ وہ خود انھیں اسکول چھوڑنے اور چھٹی کے وقت گھر واپس لانے کے لیے گئی ہیں۔

اپنے بچوں کو اسکول خود چھوڑنے والی بہت سی ماؤں نے اس موقع پر بے پایاں خوشی کا اظہار کیا ہے اور ڈرائیونگ کی اجازت کو سماجی سطح پر ایک خوش آیند تبدیلی قرار دیا ہے۔

نئے تعلیمی سال کے پہلے روز بہت سی معلمات بھی خود کار یں چلا کر اپنے اپنے تعلیمی اداروں میں پہنچی ہیں۔انھوں نے اس توقع کا اظہار کیا ہے کہ جن گاڑیوں پر پہلے معلمات اپنے اداروں میں جاتی تھیں، ان کے حادثات میں اب نمایاں کمی و اقع ہوگی کیونکہ وین ڈرائیور حضرات بڑے بے ہنگم طریقے اور جلد پہنچنے کے چکر میں تیزرفتاری سے گاڑیاں چلاتے تھے جس سے انھیں آئے دن حادثات پیش آتے رہتے تھے۔

قبل ازیں ہر نئے تعلیمی سال کے آغاز پر سعودی خاندان بچوں کو اسکول چھوڑنے کے لیے تارک وطن ڈرائیوروں کی تلاش میں ہوتے تھے۔اب سعودی خواتین کو کاریں چلانے کی اجازت ملنے کے بعد بیشتر خاندانوں کو غیرملکی ڈرائیوروں کو بھرتی کرنے کی کوئی پریشانی نہیں ہوگی کیونکہ بہت سی ماؤں نے ازخود یہ نئی ذمے داری سنبھال لی ہے اور ایک طرح سے ان کی مصروفیت میں بھی اضافہ ہوگیا ہے۔