.

بشارالاسد کا جنگی جنون ادلب میں ہزاروں افراد کی موت کا سبب بن سکتا ہے: ٹرمپ

اسد رجیم ادلب پر بے مقصد فوج کشی سے باز رہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خبردار کیا ہے کہ شامی رجیم اور بشارالاسد کا جنگی جُنون ادلب شہرمیں ہزاروں بے گناہ شہریوں کی موت کا سبب بن سکتا ہے۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ ’ٹوئٹر‘ پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں صدر ٹرمپ نے زور دیا کہ بشارالاسد اور ان کے حلیف روس ادلب میں بے مقصد اور بے ترتیب فوج کشی سے باز رہیں۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر ادلب پر حملہ کیا گیا تو اس کے نتیجے میں ہزاروں بے گناہ شہری مارے جا سکتے ہیں۔

صدر ٹرمپ نے لکھا کہ ’ادلب پرحملہ کرکے بشارالاسد، ایران اور روس بہت بڑی انسانی غلطی کریں گے۔ اس حملے کے نتائج انتہائی خطرناک اور بھیانک ہو سکتے ہیں۔

صدر ٹرمپ نے کہا کہ اگر ادلب پر فوجی چڑھائی کی گئی تو اس کے نتیجے میں ہزاروں افراد ہلاک ہوسکتے ہیں۔ عالمی برادری اس کی ہرگز اجازت نہیں دے گی۔

قبل ازیں روسی وزیرخارجہ سیرگی لافروف نے کہا تھا کہ شمالی ادلب کی صورت حال پر صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اعتدال پسند اپوزیشن اور دہشت گردوں کو ایک دوسرے سے جدا کرنا ناگزیر ہے۔

ایرانی وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے بھی ادلب کو دہشت گردوں سے پاک کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ ادلب گورنری موجود دہشت گرد تنظیموں کے خلاف بھرپور کارروائی کرنا ہوگی۔