.

الحدیدہ کے معاملے میں ’یو این‘ مندوب غلطی کے مرتکب ہوئے: یمنی وزیر اعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے وزیراعظم احمد عبید بن دغر نے الزام عاید کیا ہے کہ اقوام متحدہ کے یمن کے لیے خصوصی ایلچی ’مارٹن گریویتھ‘ الحدیدہ شہر میں جاری کشیدگی کے خاتمے کے حوالے سے ایسی تجاویز پیش کیں جن پر عمل درآمد نہیں کیا جاسکتا۔ ان کا کہنا تھا کہ گریویتھ الحدیدہ کے حوالے سے غلطی کے مرتکب ہوئے ہیں۔

یمن میں’العربیہ‘ کے نامہ نگار کے مطابق وزیراعظم نے ایک بیان میں کہا کہ اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریویتھ نے بعض امور میں درست اور بعض میں غلط تجاویز پیش کیں۔ انہوں نے الحدیدہ بندرگاہ کے تنازع کے حل کے حوالے سے جو تجاویز پیش کیں وہ قابل قبول نہیں۔ ایسی تجاویز سے الحدیدہ کا بحران حل نہیں ہوسکتا۔

بن دغر نے حوثی باغیوں کو چیلنج کیا کہ وہ ہتھیار پھینک کر انتخابات میں حصہ لیں۔ وزیراعظم نے یہ بیان ایک ایسے وقت میں دیا جب دوسری جانب اقوام متحدہ کے زیراہتمام جنیوا میں یمن کے بحران کے حل کے حوالے سے مذاکرات کی کوششیں جاری ہیں۔

اقوام متحدہ کے مندوب کے دفتر سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ آج جمعہ کے روز جنیوا میں کسی اجلاس کے انعقاد کا امکان نہیں۔

’العربیہ‘ کے نامہ نگار کے مطابق حوثیوں کی طرف سے مذاکرات کےبائیکاٹ کے باوجود یمنی حکومت کا مذاکراتی وفد اس وقت جنیوا میں ہے جب کہ اقوام متحدہ کے مندوب حوثیوں کو بھی مذاکرات میں شامل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

قبل ازیں اقوام متحدہ کے ایلچی نے بھی کہا تھا کہ انہیں توقع نہیں کہ حوثی باغیوں کا مذاکراتی وفد جنیوا میں امن مذاکرات میں شرکت کرے گا، تاہم وہ فریقین کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں اورانہیں بات چیت میں شرکت پر قائل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔