.

شدید بحران کے بعد ترکی اور ہالینڈ میں سفیروں کا دوبارہ تقرّر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ انقرہ اور ایمسٹرڈم حکومتوں نے دونوں ملکوں کے دارالحکومتوں میں سفیروں کے دوبارہ تقرّر کے ذریعے معمول کے تعلقات کی جانب ایک اور قدم بڑھایا ہے۔

دونوں ملکوں نے ایک تنازع کے سبب گزشتہ برس اپنے سفیروں کو واپس بُلا لیا تھا۔ تنازع کا سبب ہالینڈ کا وہ فیصلہ تھا جس میں ہالینڈ کی سرزمین پر تُرک ذمّے داران کو ترکی میں صدر کے اختیارات میں اضافے سے متعلق ریفرینڈم کے دوران مہم چلانے سے روک دیا گیا تھا۔

جمعے کے روز جاری بیان میں ترکی کی وزارت خارجہ نے بتایا کہ صدر رجب طیب ایردوآن کی حکمراں جماعت سے تعلق رکھنے والے سابق رکن پارلیمنٹ سابان ڈیسلے کو ہالینڈ میں ترکی کا سفیر مقرر کیا گیا ہے۔ بیان میں مزید بتایا گیا کہ ہالینڈ کے وزیر خارجہ آئندہ ہفتے ترکی کا دورہ کریں گے جو "تعلقات معمول پر لانے کے حوالے سے آئندہ اقدام ہو گا"۔

فوری طور پر ترکی میں ہالینڈ کے نئے سفیر کے متعلق تفصیلات سامنے نہیں آئیں۔