.

الجزائر : سابق عسکری قیادت "زیرِ نگرانی" آ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ نیوز چینل کے نمائندے نے اتوار کے روز اس امر کی تصدیق کی ہے کہ الجزائر کی فوج کے سربراہ نے مطالبہ کیا ہے کہ عسکری قیادت کے بیرون ملک جانے کا اُنہیں پیشگی علم ہونا چاہیے۔

نمائندے کے مطابق صورت حال میں پراسراریت کا پہلو ہے اور مذکورہ قیادت میں سے دو شخصیات اس وقت علاج کی غرض سے الجزائر سے باہر ہیں جب کہ تیسری شخصیت خاندانی ملاقات کے لیے پیرس کے دورے پر ہیں۔

اس سے قبل یہ خبر گردش میں آئی تھی کہ الجزائر کے حکام نے سابق عسکری اور سکیورٹی قیادت کو بیرون ملک سفر سے روک دیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جن شخصیات کے لیے سفر کی ممانعت ہے اُن میں فوجی پولیس کے سابق سربراہ بریگیڈیر جنرل مناد نوبہ ، فرسٹ ملٹری ایریا کے سابق سربراہ بریگیڈیر جنرل لحبیب شنتوف، سیکنڈ ملٹری ایریا کے سابق سربراہ بریگیڈیر جنرل سعید بائی اور فورتھ ملٹری ایریا کے سابق سربراہ بریگڈیر جنرل عبدالرزاق شریف شامل ہیں۔

علاوہ ازیں بریگیڈیر جنرل بوجمعہ بو دواور کو بھی سفر سے روک دیا گیا ہے جو وزارت دفاع میں سابق مالیاتی ڈائریکٹر کے منصب پر کام کر رہے تھے۔