.

ایران میں مبینّہ مجرم کو کرین کے ذریعے سرعام پھانسی کی ہولناک ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں ایک نوجوان شخص کو کرین کے ذریعے سفاکانہ انداز میں سرعام پھانسی پر لٹکانے کی ایک ویڈیو منظر عام پر آئی ہے۔

انسانی حقوق کے کارکنان نے سوشل میڈیا پر اس کو پھانسی دینے کی ویڈیو شئیر کی ہے۔انھوں نے دعویٰ کیا ہے کہ اس شخص کو جمعہ کے روز ایران کے جنوبی شہر مرودشت میں سرعام کرین کے ذریعے تختہ دار پر لٹکایا گیا تھا۔

یہ بتایا گیا ہے کہ پھانسی والے شخص کی عمر 26 سال تھی ۔وہ گذشتہ 13 سال سے جیل میں قید تھا۔اس کو جب گرفتار کیا گیا تھا تو اس وقت وہ ایک نوعمر لڑکا تھا اور اس کی عمر 13 سال کے لگ بھگ تھی۔فوری طور پر یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ اس سے اتنی کم عمری میں کیا سنگین جرم سرزد ہوا تھا۔

اس کی پھانسی کے منظر کو دیکھنے کے لیے سیکڑوں افراد جمع ہیں۔ویڈیو میں پس منظر میں بعض عورتوں کی رونے کی آوازیں بھی سنائی دے رہی ہیں اور ان کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ مصلوب شخص کی رشتے دار ہیں۔وہ اس انداز میں پھانسی دینے کے عمل کی مذمت کررہی ہیں۔

ایران کی انسانی حقوق کی تنظیم کا کہنا ہے کہ گذشتہ چند ماہ کے دوران میں ملک میں پھانسیوں کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور صرف اگست کے مہینے میں 30 افراد کو تختہ دار پر لٹکا دیا گیا تھا۔

انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹر نیشنل نے قبل ازیں اپنی ایک رپورٹ میں بتایا تھا کہ ایران میں 2017ء میں 507 افراد کو مختلف جرائم کی پاداش میں تختہ دار پر لٹکایا گیا تھا۔