.

ناکام بغاوت کے الزام میں 85 ترک فوجی گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی میں پولیس نے جولائی 2016ء کو حکومت کا تختہ الٹنے کی ناکام کوشش کے الزام میں 85 فوجی افسروں اور اہلکاروں کو گرفتار کیا ہے۔

خبر رساں ادارے ’اناطولیہ‘ کے مطابق انقرہ کے پراسیکیوٹر نے فضائی دفاع سے منسلک 110 فوجیوں حراست میں لینے کا حکم دیا ہے۔ تین کرنل، پانچ پائلٹ اور دیگر فوجی افسران شامل ہیں۔ پراسیکیوٹر کے حکم پر 85 فوجیوں کو حراست میں لیا گیا ہے اور 25 کی تلاش جاری ہے۔

خیال رہے کہ جولائی 2016ء کو ترک فوج کے ایک گروپ نے صدر طیب ایردوآن کا تختہ الٹنے کی ناکام کوشش کے بعد امریکا میں جلا وطن سرکردہ رہ نما فتح اللہ گولن کے حامیوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا تھا۔ یہ کریک ڈاؤن دو سال گذر جانے کے باوجود جاری ہے۔ فتح اللہ گولن ترکی میں بغاوت میں ملوث ہونے کا الزام مسترد کرتے ہیں۔

ترک پولیس بغاوت میں معاونت کے شبے میں 77 ہزار افراد کو گرفتار کرچکی ہے جب کہ ڈیڑھ لاکھ سرکاری ملازمین کو ان کی ملازمتوں سے برطرف کیا گیا ہے۔