.

عرب اتحاد کا یمن میں انسانی امداد کے لیے نئی راہ داریاں کھولنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے یمن کے دارالحکومت صنعاء اور الحدیدہ کی بندر گاہ کے درمیان انسانی امداد کی حمل ونقل کے لیے نئی راہ داریاں کھولنے کا اعلان کیا ہے۔الحدیدہ سے صنعاء تک یہ راہ داریاں المہاوت ، حجہ اور باجیل کے راستوں سے کھولی جائیں گی۔

کرنل ترکی المالکی نے سوموار کے روز سعود ی دارالحکومت الریاض میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حوثی شیعہ باغیوں کی یمن کی قانونی حکومت کے خلاف مسلح بغاوت کے چار سال کے بعد بھی یمنی گونا گوں مصائب سے دوچار ہیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ اس وقت خطے میں ایسے نظام موجود ہیں جو دہشت گرد گروپوں کی سرپرستی کررہے ہیں اور انھیں ہتھیار ، میزائل ، ڈرونز اور تیز رفتار کشتیاں مہیا کررہے ہیں۔ان کا اشارہ ایران کی جانب تھا جو حوثی باغیوں کو درپردہ اور کھلم کھلا مالی اور اسلحی امداد مہیا کررہا ہے۔

واضح رہے کہ یمن کی مسلح حوثی ملیشیا نے 21 ستمبر 2014ء کو دارالحکومت صنعاء پر قبضہ کر لیا تھا اور وہاں سے صدر عبد ربہ منصور ہادی اور دوسرے حکومتی عہدے داروں کو اپنی جانیں بچا کر جنوبی شہر عدن کی جانب بھاگ جانے پر مجبور کردیا تھا۔ صدر ہادی اس وقت عدن سے قومی فوج کے کنٹرول والے علاقوں میں حکومت کررہے ہیں جبکہ صنعاء ، الحدیدہ اور بعض دوسرے علاقوں میں حوثیوں نے اپنی حکومت قائم کررکھی ہے۔