.

ایران اور پاسداران کی حمایت یافتہ دہشت گرد تنظیم کے 169 افراد کے خلاف عدالتی کارروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحرین میں استغاثہ نے "حزب اللہ البحرینی" نامی مسلح جماعت سے تعلق رکھنے والے 169 افراد کے خلاف اجتماعی عدالتی کارروائی کے آغاز کا اعلان کیا ہے۔

دہشت گرد جرائم کی پراسیکویشن کے سربراہ ڈاکٹر احمد الحمادی کے مطابق ان کی استغاثہ نے (حزب الله البحرينی) نامی دہشت گرد تنظیم کی تاسیس کے حوالے سے تحقیقات مکمل کر لیں۔ اس کے بعد 169 ملزمان کے معاملے کو عدالتی کارروائی کے لیے پیش کر دیا گیا ہے۔ مذکورہ افراد پر ایک دہشت گرد جماعت کی تاسیس اور اس میں شمولیت، دھماکے کرنے، اقدام قتل، اسلحہ اور گولہ بارود کے استعمال کی تربیت حاصل کرنے، بغیر لائسنس کے آتشی ہتھیاروں کے رکھنے اور استعمال کرنے، ایک دہشت گرد جماعت کی فنڈنگ کرنے، اسلحہ اور گولہ بارود چھپا کر رکھنے اور سرکاری ادارے کی ملکیت میں موجود رقم برباد کرنے کے الزامات ہیں۔

بحرین میں سرکاری استغاثہ کو اطلاع موصول ہوئی تھی کہ ایرانی حکمراں نظام کی قیادت اور ایرانی پاسداران انقلاب کے عناصر کے درمیان رابطہ کاری کے ذریعے بحرین میں ایک دہشت گرد گروپ تشکیل دیا گیا ہے۔ اس کا مقصد بحرین میں موجود مختلف دہشت گرد تنظیموں اور گروپوں کی صفوں کو اکٹھا کرنا ہے۔ ان تمام گروپوں کو مکمل تکنیکی ، لوجسٹک اور مالی سپورٹ فراہم کی جاتی ہے تا کہ وہ حزب الله البحرينی کے نام سے ایک تنظیم کے پرچم تلے آ جائیں۔

بحرین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق استغاثہ کی درخواست پر سکیورٹی فورسز نے کارروائی کا آغاز کیا اور 169 ملزمان کا پتہ چلا لیا۔ ان میں سے 111 کو گرفتار کر لیا گیا اور بقیہ کے حوالے سے نوٹفکیشن جاری کر دیا گیا۔ پکڑے جانے والے ملزمان نے ایک دہشت گرد جماعت تشکیل دینے اور دیگر مذکورہ الزامات کا اقرار کر لیا۔ ایجنسی نے مزید بتایا کہ ملزمان کے رہنے کے مقامات کی تلاشی کے علاوہ جگہاؤں کا بھی تفصیلی معائنہ کیا گیا جہاں یہ لوگ اپنے جرائم میں استعمال ہونے والی اشیاء اور ساز و سامان چھپا کر رکھتے تھے۔