.

لیبیا : دارالحکومت طرابلس کے جنوب میں فائربندی کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ قومی اتحاد کی حکومت نے دارالحکومت طرابلس کے جنوب میں متحارب ملیشیاؤں کے درمیان فائر بندی کے نئے سمجھوتے کا اعلان کیا ہے۔

اس سمجھوتے پر طرابلس اور مغربی قصبے ترہونہ سے تعلق رکھنے والی ملیشیاؤں کے نمایندوں نے بدھ کے روز دست خط کیے ہیں۔تاہم اس سے قبل ہی منگل سے دارالحکومت کے جنوب میں نئی جھڑپوں کی اطلاعات نہیں ملی ہیں ۔

طرابلس کے نواحی علاقوں میں 26 اگست سے وقفے وقفے سے دو ملیشیاؤں میں کنٹرول کے لیے لڑائی جاری تھی۔ ان کے درمیان 4 ستمبر کو جنگ بندی ہوئی تھی لیکن اس ہفتے ان کے درمیان دوبارہ لڑائی چھڑ گئی تھی۔بالخصوص دارالحکومت کے علاقے صلاح الدین اور ناقابل استعمال بین الاقوامی ہوائی اڈے کی جانب جانے والی شاہراہ پر جھڑپیں ہورہی ہیں۔ان متحارب ملیشیاؤں کا تعلق لیبیا کے تیسرے بڑے شہر مصراتہ اور جنوب مشرق میں واقع قصبے ترہونہ سے ہے۔

لیبیا کی وزارت صحت کے فراہم کردہ اعداد وشمار کے مطابق طرابلس اور اس کے نواحی علاقے میں گذشتہ ایک ماہ سے متحارب جنگجو دھڑوں کے درمیان جاری لڑائی کے نتیجے میں 115 افراد ہلاک اور کم سے کم 400 زخمی ہوئے ہیں۔لڑائی سے متاثرہ علاقوں سے بے گھر ہونے والے افراد کو ا سکولوں میں عارضی طور پر ٹھہرایا جارہا ہے جس کے پیش نظر 3 اکتوبر سے نئے تعلیمی سال کا آغاز ممکن نظر نہیں آرہا ہے اور اس میں تاخیر ہوجائے گی۔