.

حوثیوں نے علی صالح کے بیٹوں کو لے جانے والی فلائیٹ اترنے سے روک دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے ایران نواز حوثی ملیشیا مقتول سابق صدر علی عبداللہ صالح کے بیٹوں کو صنعاء سے باہر لے جانے کے لیے آئے اقوام متحدہ کے طیارے کو اترنے سے روک دیا۔ حالانکہ اس سے قبل حوثیوں اور اقوام متحدہ کے درمیان اس حوالے سے ایک معاہدہ بھی طے پا چکا تھا۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کا ایک طیارہ گذشتہ روز علی عبداللہ صالح کے بیٹوں صلاح اور مدین کو یمن سے باہر لے جانے کے لیے صنعاء پہنچا تو اسے اترنے سے روک دیا گیا۔

طیارے کے ذریعےمقتول سابق یمنی صدر علی صالح کے بیٹوں کو صنعاء سے اردن کے دارالحکومت عمان لے جانا تھا تاہم حوثی باغیوں نے انہیں لے جانے کے لیے آئے جہاز کو لینڈ کرنے سے روک دیا۔

خیال رہے کہ حوثیوں نے شرط عاید کی تھی علی صالح کے اقارب کو سلطنت اومان کے طیارے کے ذریعے مسقط لے جایا جائے مگر سعودی عرب کی قیادت میں قائم عرب اتحاد نے اقوام متحدہ کی فلائیٹ کے ذریعے صنعاء سے علی صالح کے اقارب کو نکالنے کی تجویز پیش کی تھی۔