افغان جنگ کے مقابلے میں شام میں روسی فوج کا معمولی جانی نقصان

تین سال دوران شام میں 112 روسی فوجی ہلاک ہوئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں سنہ 2015ء سے روسی فوج کے آپریشن کے دوران جوابی کارروائیوں میں 112 روسی فوجی ہلاک ہوئے۔ افغانستان پر روسی حملے کے مقابلے میں شام میں روسی فوج کا انتہائی معمولی جانی اور مالی نقصان ہوا۔

روس کی فیڈرل کونسل میں دفاع و سلامتی کمیٹی کے چیئرمین ’فیکٹور بونڈاریو‘ نے ایک پریس بیان میں بتایا کہ شام میں جب سے فوجی آپریشن کا آغاز کیا گیا کم سے کم 112 روسی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔

بونڈاریو کی طرف سے یہ بیان شام میں ماسکو کی مداخلت اور اسد رجیم کی حمایت میں فوجی آپریشن کےتین سال مکمل ہونے کے موقع پر جاری کی گئی ہے۔

بونڈا ریو نے بتایا کہ شام میں 112 فوجی ہلاک ہوئے۔ ان میں نصف تعداد ’این 26‘ اور ’ایل 20‘ طیاروں کے حادثے میں مارے گئے۔ شام کی جنگ میں روسی فوج کے 8 جنگی طیارے 7 فوجی ہیلی کاپٹر اور متعدد توپ خانے بھی تباہ ہوئے۔

افغان جنگ کے ساتھ تقابل کرتے ہوئے مسٹر بونڈا ریو کا کہنا تھا کہ افغان جنگ کے پہلے تین برسوں میں 4800 روسی فوجی ہلاک،60 ٹینک، 400 توپیں، پندرہ طیارے اور 97 ہیلی کاپٹر تباہ ہوئے تھے۔

خیال رہے کہ گذشتہ برس مارچ روس کا ایک ٹرانسپورٹ طیارہ ’این 26‘ شام میں حیمیم‘ فوجی اڈے پر گرکر تباہ ہوگیا تھا جس کے نتیجے میں 39 روسی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔حال ہی میں 17 ستمبرکو شام میں روس کا ایک جنگی طیارہ’ایل20‘ تباہ ہوگیا تھا جس میں موجود 15 فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں