.

انڈونیشیا: زلزلے اور سونامی سے ہلاکتوں کی تعداد 1200 سے تجاوز کر گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انڈونیشیا میں آفات سے نمٹنے والے ادارے کے اعلان کے مطابق جمعے کے روز جزیرہ سولاویسی میں آنے والے خوف ناک زلزلے اور سونامی طوفان کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد 1234 ہو گئی ہے۔

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اس دوران 59 ہزار کے قریب افراد بے گھر ہو گئے۔ انڈونیشیا کی حکومت نے اس قدرتی آفت کا سامنا کرنے کے لیے عالمی برادری سے مدد طلب کر لی۔

ادھر مشرقی جاوا کے ہوائی اڈے نے انڈونیشیا کے وسطی شہر بالو سے متاثرہ افراد کو لے کر آنے والی ابتدائی پروازوں کا استقبال کیا۔ سولاویسی جزیرے پر واقع شہر بالو جمعے کے روز آنے والے زلزلے اور سونامی طوفان کے نتیجے میں تباہ ہو گیا تھا۔

منگل کے روز C-130 طیارہ درجنوں افراد کو لے کر فوجی ہوائی اڈے پر اترا۔ طیارے میں آنے والے افراد میں بعض کی تشویش ناک تھی اور انہیں ہنگامی طبّی امداد کی ضرورت تھی۔

مشرقی جاوا میں فضائی اڈے کے کمانڈر کے مطابق انخلاء کی کارروائی میں شریک ہونے کے لیے سات طیارے تیار کھڑے ہیں تاہم پروازوں کی تیاری کے لیے طیاروں کے عملے کو واپس بلانے کی ضرورت ہے۔

جزیرہ سولاویسی میں متاثرہ علاقوں کی صورت حال انتہائی ناگفتہ ہے جہاں کھانے پینے کی اشیاء، ایندھن اور دیگر ضروری چیزیں ختم ہو رہی ہیں۔