.

فرانس نے ایران میں نئے سفیر کی تعیناتی روک دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس نے ایران میں نئے سفیرکی تعیناتی کا عمل روک دیا ہے۔ اخباری اطلاعات کے مطابق فرانسیسی حکومت کا کہنا ہے کہ تہران پہلے پیرس میں دہشت گردی کی اس منصوبہ بندی کے بارے میں وضاحت کرے گا جو چند ہفتے قبل ایرانی اپوزیشن کے ایک اجتماع پرحملے کے لیے تیار کی گئی تھی۔ یہ سازش فرانسیسی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے ناکام بنا دی تھی۔

اخبار ’لی مونڈ‘ کی رپورٹ کے مطابق پیرس نے تہران میں نئے سفیر کی تعیناتی غیرمعینہ مدت تک ملتوی کردی ہے۔ اخبار کےمطابق فرانسیسی وزارت داخلہ اور خارجہ کی طرف سے متفقہ طورپر کہا گیا ہے کہ ایران میں نئے سفیر کی اس وقت تک تعیناتی عمل میں نہیں لائی جائے گی جب تک تہران 30 جون کو پیریس میں اپوزیشن کے ایک اجتماعی پر حملے کی منصوبہ بندی کے بارے میں وضاحت نہیں کرے گا۔

ایک ذریعے نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ’وزارت انٹیلی جنس کے آپریشنل امور کے منتظمین نے ایران میں نئے سفیر کی تعیناتی روکنے کا حکم دیا تھا۔

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں دیکھی گئی ہے جب دوسری جانب فرانس نے ایرانی سیکیورٹی اداروں اور متعدد سفارت کاروں کی فلیبنٹ میں حملے کی سازش میں ملوث ہونے پر پابندی عاید کی گئی ہے۔

فرانسیسی صدر عمانویل میکروں کے مشیر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ تہران نے چند ہفتے کے اندر اندر حملے کی منصوبہ بندی سے متعلق معلومات فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے جس کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان سفارتی تعلقات معمول پر آسکتے ہیں۔