جزیرۃ العرب میں ایک اورحزب اللہ کو سر نہیں اٹھانے دیں گے: ولی عہد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی نشریاتی ادارے ’بلومبرگ‘ کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے کہا کہ ہے کہ عرب ممالک میں ایک اور حزب اللہ کو سر نہیں اٹھانے دیں گے۔

انہوں نے جواب میں کہا کہ مجھے امید ہے کہ یمن جنگ بہت جلد اختتام پذیر ہوگی۔ ہم نہیں چاہتے کہ ہماری سرحد پر جنگ چھڑی رہے مگر ہم جزیرۃ العریب میں ایک نیا حزب اللہ نہیں دیکھنا چاہتے۔ یمن کی جنگ سعودی عرب کے لیے سرخ لکیر ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ صرف سعودی عرب ہی نہیں بلکہ پوری دنیا حزب اللہ کے وجود کے خلاف ہے۔ ہم آبنائے ہرمز پر حزب اللہ اور ایران کا کنٹرول گوارا نہیں کریں‌ گے۔ یہ گذرگاہ 15 فی صد عالمی تجارتی جہازوں کی گذرگاہ ہے۔ ہم یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کی جنگ منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہر جنگ میں غلطیاں ہوتی ہیں۔ المناک واقعات کا جلد حل نکالا جائے گا۔ یمن کی جنگ دراصل قومی سلامتی کی جنگ ہے۔ توقع ہے ہمارے اس خیال کو سمجھ پائیں گے۔ ہم انہیں قائل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ عرب ممالک کی قومی سلامتی کے لیے خطرات پیدا نہ کیے جائیں مگر جب ایسا ہوتو ان خطرات کو دور کرنے اور اپنے مفادات کے تحفظ کے لیے ہمارے پاس پاس جنگ کےسوا کوئی چاری نہیں رہتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں