اطالیہ کی پناہ گزینوں کے لیے ہوائی اڈے بند کرنے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اطالوی وزیر داخلہ ماتیو سالوینی نے دھمکی دی ہے کہ اگر جرمنی نے مہاجرین کو "چارٹر" پروازوں کے ذریعے واپس اطالیہ لانے کا فیصلہ کیا تو تمام اطالوی ہوائی اڈوں کو بند کر دیا جائے گا۔

اتوار کے روز اپنی ٹوئیٹ میں وزیر داخلہ نے لکھا کہ "اگر برلن اور برسلز درجنوں مہاجرین کو چارٹر پروازوں میں سوار کر کے واپس اطالیہ پہنچانے کا سوچ رہے ہیں تو وہ جان لیں کہ انہیں کوئی ہوائی اڈہ فراہم نہیں کیا جائے گا۔ ہم تمام ہوائی اڈوں کو تالا ڈال دیں گے جس طرح کہ ہم نے بندرگاہوں کو بھی بند کیا"۔

ایک جرمن خبر رساں ایجنسی نے میونخ ہوائی اڈے کے غیر مذکورہ ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ پیر کے روز سے جرمنی سے اطالیہ کے لیے چارٹر پروازوں کے آغاز کا امکان ہے۔ جرمن حکام نے ان معلومات کی تصدیق یا تردید کے حوالے سے کوئی بیان نہیں دیا۔

جرمنی کی وزارت داخلہ نے اتوار کی شام ایک اعلان میں بتایا تھا کہ آئندہ چند روز کے دوران مہاجرین کی اطالیہ واپسی کی کارروائی کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔

اطالوی اخبار la Repubblica نے ہفتے کے روز تصدیق کی تھی کہ ہجرت کے امور سے متعلق جرمن فیڈرل آفس اطالیہ کے راستے یورپی یونین پہنچنے والے مہاجرین کو بڑی تعداد میں پیغامات بھیج رہا ہے۔ ان پیغامات میں بتایا گیا ہے کہ ڈبلن سمجھوتے کے تحت ان مہاجرین کی "منتقلی" بہت جلد عمل میں آئے گی۔ یہ سمجھوتا مہاجرین کو مجبور کرتا ہے کہ وہ اپنی پناہ لینے کی درخواستیں اُس پہلے یورپی ملک کو پیش کریں جہاں ان کا اندراج ہوا تھا۔ اخبار کے مطابق اس سلسلے میں پہلا طیارہ منگل کے روز اطالیہ پہنچنے کا امکان ہے۔

اگر ان معلومات کی تصدیق ہو گئی تو یہ ہجرت کی پالیسی کے حوالے سے جرمن حکومت میں ایک بار پھر اختلاف بھڑکا دے گا ،،، جہاں جرمن چانسلر انجیلا میرکل اور وزیر داخلہ ہورسٹ زیہوفر آمنے سامنے ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں