ترکی : مغربی ساحلی علاقے میں تارکینِ وطن کی کشتی ڈوب گئی ، 9 ہلاک ، 25 لاپتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترکی کے مغربی ساحلی علاقے میں تارکینِ وطن کی ایک کشتی ڈوب گئی ہے جس کے نتیجے میں نو افراد ہلاک اور پچیس زخمی ہوگئے ہیں۔

ترکی کے ساحلی محافظوں نے بدھ کے روز اس حادثے کی اطلاع دی ہے لیکن یہ واضح نہیں ہوسکا کہ اس کشتی کی جائے منزل کیا تھی اور یہ کہاں سے چلی تھی۔

کوسٹ گارڈ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ تارکین ِ وطن کی کشتی صوبہ ازمیر کی حدود میں بحر متوسط میں ڈوبی ہے۔کشتی میں روانہ ہونے کے بعد پانی بھرنا شروع ہوگیا تھا ۔ابتدائی اطلاع کے مطابق اس میں پینتیس افراد سوار تھے اور اب لاپتا پچیس افراد کی تلاش کے لیےسمندر میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

واضح رہے کہ ترکی سے اسمگلروں کی غیر محفوظ کشتیوں اور لانچوں کے ذریعے غیر قانونی تارکین وطن یونان کا رُخ کرتے ہیں اور پھر وہاں سے وہ دوسرے یورپی ممالک کی جانب چلے جاتے ہیں۔2015ء میں ترکی سے دس لاکھ سے زیادہ تارکین وطنِ برّی اور بحری راستوں سے یورپی یونین کے رکن ممالک کے علاقوں میں داخل ہوئے تھے۔ان میں زیادہ تعداد مشرقِ اوسط اور افریقا کے جنگ زدہ اور غربت زدہ ممالک سے تعلق رکھنے والے افراد کی تھی۔

ایک سال بعد 2016ء میں ترکی اور یورپی یونین کے درمیان ایک سمجھوتا طے پایا تھا جس کے بعد یورپ کا رُخ کرنے والے تارکین ِوطن اور مہاجرین کی تعداد میں نمایاں کمی واقع ہوئی تھی۔ترکی کے علاوہ لیبیا کے آبی راستے سے غیر قانونی تارکینِ وطن اٹلی کا رُخ کرتے ہیں اور ان کی کشتیوں اور چھوٹے جہازوں کو بھی آئے دن حادثات پیش آتے رہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں