.

نیویارک ٹائمز کا خاشقجی پر مضمون کے مندرجات کی تصدیق نہ کرنے کا اعتراف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے موقر روزنامہ نیویارک ٹائمز نے ترکی میں لاپتا ہونے والے سعودی صحافی جمال خاشقجی سے متعلق ایک مضمون کے مندرجات کی تصدیق نہ کرنے کا اعتراف کیا ہے اور غیر مصدقہ مواد کو حذف کردیا ہے ۔اخبار نے تر ک حکام کے حوالے سے یہ دعویٰ کیا تھا کہ سعودی عرب کے پندرہ خفیہ اہلکار سیاحوں کے روپ میں جمال خاشقجی کو قتل کرنے کے لیے استنبول آئے تھے اور وہ واردات کے بعد ترکی سے چلتے بنے تھے۔

نیویارک ٹائمز کے مدیر نے اس مضمون کے آخر میں ایک نوٹ لکھا ہے :’’اس مضمون کی ابتدائی شکل میں متعدد سعودیوں کے حوالے سے تفصیل شامل تھی ۔ ترک حکام نے انھیں اس کیس میں نامزد کیا تھا لیکن نیویارک ٹائمز کو آزادانہ طور پر ان کے موقف کی تصدیق نہیں ہوئی تھی ۔اس لیے اب مضمون سے اس تفصیل کو حذف کردیا گیا ہے‘‘۔

اخبار نے لکھا ہے کہ مضمون سے حذف کیے گئے پیرے میں شامل مشتبہ اطلاع ترکی کی خبررساں ایجنسی صباح کی فراہم کردہ تھی جبکہ اس سے پہلے مضمون میں خود نیویارک ٹائمز ہی کو اس اطلاع کا کریڈٹ دیا گیا تھا ۔

اب مدیر کے وضاحتی نوٹ نے خود اخبار کی ساکھ کو داؤ پر لگا دیا ہے اور سوشل میڈیا پر بہت سے لکھاری اس کی ساکھ پر سوال اٹھا رہے ہیں ۔ان کا کہنا ہے کہ اخبار کی معلومات کا منبع اور مآخذ قطر کا ملکیتی نیوز چینل الجزیرہ اور اخوان المسلمون کے وابستگان تھے۔